دیہات میں بچوں کے تحفظ کے نظام کو مضبوط کرنالازمی :جسٹس مسعودی

جموں/سلیکشن کم اوور سائیٹ کمیٹی کے چیئرپرسن جسٹس (ر) حسنین مسعودی نے آج دیہی سطح پر بچوں کے تحفظ کے نظام کو مضبوط کرنے اور اسے استحکام بخشنے کے لئے وکالت کی۔ضلع جموں میں دیہی سطح کے چائیلڈ پروٹیکشن کمیٹیز کے ایک تربیتی پروگرام جس کا اہتمام نیشنل ڈیولپمنٹ فاؤنڈیشن نے سلیکشن کم اوور سائیٹ کمیٹی کے اشتراک سے کیا تھاسے خطاب کرتے ہوئے جسٹس مسعودی نے این ڈی ایف اور یورپین یونین کی ان کوششوں کو سراہا جن کے تحت ریاست کے تین اضلاع میں ولیج لیول چائیلڈ پروٹیکشن کمیٹیز قائم کی گئیں ۔اس تربیتی پروگرام کا اشتراک ڈائریکٹوریٹ آف آئی سی پی ایس جے اینڈ کے نے بھی کیا تھا۔انہو ں نے سی پی سی ممبران پر زور دیا کہ وہ اپنے متعلقہ دیہات میں بچوں کے حقوق کے وکلاء کے طور پر کام کریں تاکہ ریاست جموں وکشمیر میں بچوں کے حقوق کو حقیقی جامہ پہنچایا جاجاسکے ۔ انہوں نے سی پی سی ممبران سے کہا کہ وہ حکومت کی طرف سے بچوں کی بہبودی اور حفاظت اور چلائی جارہی سکیموں پر نگاہ رکھیں اور ان سکیموں کو بچوں کے ساتھ جوڑ کر اُنہیں اِن سکیموں سے مستفید کریں۔انہوں نے سرپنچ اور پنچ ممبران پر زور دیا کہ وہ اس سلسلے میں اپنا اہم رول ادا کریں۔چیف اوپریٹنگ آفیسر این ڈی ایف نہاں گندوترا اور پروگرام منیجر این ڈی ایف پرویندر سنگھ نے تربیتی پروگرام کے ریسورس پرسنوں کے طور پر اپنے فرائض انجام دئیے جبکہ سٹیٹ مشن ڈائریکٹر آئی سی پی ایس جی اے صوفی اور بانی ایم اے رائٹس این ڈی ایف راجیو کھجوریہ ، ممبر سلیکشن کم اوور سائیٹ کمیٹی پروفیسر ڈاکٹر آر تی بخشی اور آر تی شرما کے علاوہ این ڈی ایف کے چیف اس موقعہ پر موجود تھے۔جموں ضلع کے دس دیہات سے تعلق رکھنے والے چائیلڈ پروٹیکشن کمیٹیوں نے بھی ورکشاپ میں حصہ لیا۔ سٹیٹ مشن ڈائریکٹر آئی سی پی ایس اور راجیو کھجوریہ نے بھی تقریب سے خطاب کیا۔

Please follow and like us:
1000

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *