پنچایتی انتخاب کے ساتویں مرحلے ووٹنگ 

سرپنچ حلقوں کیلئے475865 ووٹر جبکہ پنچ وارڈوں کیلئے 345880 رائے دہندگان 
جموں /ریاست میں کل منعقد ہونے والے پنچائتی انتخابات کے ساتویں مرحلے کے دوران 2714 پولنگ مراکز پر ووٹنگ ہو گی جن میں سے کشمیر صوبے کے576 اور جموں صوبے کے 2138 پولنگ مراکز شامل ہیں ۔ پولنگ کا عمل صبح آٹھ بجے شروع ہو کر دو بجے تک جاری رہے گا ۔ سی ای او جے اینڈ کے شالین کابرا کے مطابق 892 پولنگ مراکز کو انتہائی حساس زمرے میں رکھا گیا ہے جن میں سے کشمیر صوبے کے 428 اور جموں صوبے کے 464 پولنگ مراکز شامل ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ساتویں مرحلے میں 341 سرپنچ اور 1798 پنچ حلقوں کیلئے5575 اُمیدوار میدان میں ہیں جبکہ 85 سرپنچوں اور912 پنچوں کو پہلے ہی بلا مقابلہ کامیاب قرار دیا جا چکا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ ساتویں مرحلے کے دوران 475865 ووٹر سرپنچ حلقوں اور 345880 ووٹر پنچ حلقوں کیلئے ووٹ ڈالیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ ووٹروں میں پہلے ہی فوٹو ووٹر سلپ تقسیم کئے جا چکے ہیں ۔ سی ای او نے کہا کہ ریاست میں 6مرحلوں کے پنچایتی انتخابات کے دوران مجموعی طور پر 73.6 فیصد ووٹنگ درج کی گئی اور پہلے 6مرحلوں میں کشمیر صوبے میں 46.1فیصد جبکہ جموں صوبے میں 82.8 فیصد ووٹروں نے ووٹ ڈالیں ۔ انہوں نے کہا کہ یکم دسمبر کو منعقد ہوئے پنچایتی انتخابات کے چھٹے مرحلے میں ریاست میں 76.9 فیصد ووٹنگ درج کی گئی جس میں سے 84.6فیصد ووٹنگ جموں صوبے جبکہ 17.3فیصد ووٹنگ کشمیر صوبے میں ریکارڈ کی گئی۔کابرانے کہا کہ 29؍نومبر کو پنچایتی انتخابات کے پانچویں مرحلے کے دوران مجموعی طور پر ریاست میں 71.1فیصد ووٹنگ درج کی گئی جس میں کشمیر صوبے میں 33.7 فیصد جبکہ جموں صوبہ میں 85.2فیصد ووٹنگ درج کی گئی۔انہوں نے کہا کہ پنچایتی انتخابات کے چوتھے مرحلے کے دوران ریاست میں مجموعی طور پر 71.3 فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی جبکہ اس مرحلے کے دوران جموں صوبے میں 82.4 اور کشمیر صوبے میں 32.3 فیصد ووٹنگ درج کی گئی ۔ اسی طرح تیسرے مرحلے کے دوران ریاست میں 75.2 فیصد ووٹنگ درج کی گئی اس مرحلے میں کشمیر صوبے میں 55.7 جبکہ جموں صوبے میں 83 فیصد ووٹروں نے اپنی حقِ رائے دہی کا استعمال کیا ۔ 20 نومبر 2018 کو منعقد ہوئے دوسرے مرحلے کے دوران مجموعی طور پر ریاست میں 71.1 فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی اس مرحلے کے دوران جموں صوبے میں 80.4 اور کشمیر میں 52.2 فیصد ووٹنگ ریکارڈ کی گئی ۔ شالین کابرا نے کہا کہ 17 نومبر 2018 کو منعقد ہوئے پہلے مرحلے کے دوران ریاست میں 74.1 ووٹنگ درج کی گئی جس میں سے 64.5 فیصد کشمیر صوبے جبکہ 79.4 فیصد ووٹنگ جموں میں ریکارڈ کی گئی ۔سی ای او نے کہا کہ متعلقہ ریٹررننگ افسروں نے ان حلقوں کے نتایج کا اعلان کیا ۔ کابرا نے کہا کہ مختلف شکائتی معاملات اور عدالتی احکامات کے تناظر میں مناسب احکامات صادر کئے گئے ہیں اور ضرورت پڑنے پر الیکشن شیڈول دوبارہ مرتب کرنے سے متعلق نوٹیفکیشن بھی جاری کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ یہ حکمنامے اور نوٹیفکیشن سی ای او جموں کشمیر کی ویب سائیٹ پر دستیاب ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ تمام مراکز پر کم سے کم بنیادی سہولیات فراہم کی جارہی ہیں۔سی ای او نے کہا کہ پنچائتی انتخابات 2018 کے احسن انعقاد کو یقینی بنانے کیلئے جنرل ابزرور تعینات کئے گئے ہیں علاوہ ازیں اُمیدواروں کے اخراجات پر نظر رکھنے کیلئے ایکسپنڈیچر ابزرور بھی تعینات کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ خاص طور سے انتہائی حساس پولنگ مراکز پر مائیکرو ابزرور تعینات کئے گئے ہیں اس کے ساتھ ساتھ زونل اور سیکٹر مجسٹریٹ بھی تعینات کئے گئے ہیں ۔ سی ای او نے کہا کہ ریاست کے تمام ضلعوں میں جانکاری فراہم کرنے کیلئے کنٹرول روم قائم کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ سلامتی سمیت تمام انتظامات مکمل کئے جا چکے ہیں ۔ سی ای او نے کہا کہ حکومت نے چناؤ ہونے والے علاقوں میں پولنگ کے دن چھٹی کا اعلان کیا ہے تا کہ ووٹر ووٹ ڈال سکیں ۔ انہوں نے کہا کہ جن ملازمین کو دیگر علاقوں میں ووٹ ڈالنے جانا ہو گا اُن کے حق میں خصوصی کیجول لیو منظور کی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی دفاتر رہنما خطوط کے مطابق بند نہیں ہوں گے تا ہم ان دفاتر کے جو ملازمین اپنی حقِ رائے دہی کا استعمال کرنا چاہتے ہوں انہیں یہ سہولیت فراہم کی جائے گی ۔ سی ای او نے ووٹروں سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنی حقِ رائے دہی کا استعمال کرنے کیلئے آگے آئیں تا کہ اُن کے مقامی مسائل حل کئے جا سکیں ۔ 

Please follow and like us:
1000

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *