پونچھ میں جنگجو مخالف آپریشن:ایک گرفتار 

علاقے میں مزید ملی ٹینٹوں کی موجودگی کی اطلاع ۔ کئی علاقے سیل کردئے گئے /دفاعی ذرائع
سرینگر؍عسکریت پسندوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد سیکورٹی فورسزمشترکہ طورپر مینڈھر میں بڑے پیمانے پر جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا جس دوران ایک جنگجو کو اسلحہ سمیت گرفتار کیا گیا ہے۔ دفاعی ذرائع نے اسکی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ علاقے میں جنگجو مخالف آپریشن جاری ہے ۔ خبر رساں ایجنسی یو پی آئی کے مطابق عسکریت پسندوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد سیکورٹی فورسز نے مینڈھر پونچھ میں بڑے پیمانے پر جنگجو مخالف آپریشن شروع کیا ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ 37آر آر ، 16آر آر ، 156بٹالین ٹریٹوریل آرمی نے مشترکہ طورپر مینڈھر پونچھ کے ہرنی علاقے کو محاصرے میں لے کر گھر گھر تلاشی لی جس دوران مکینوں سے پوچھ تاچھ کی گئی ہے۔معلوم ہوا ہے کہ فورسز نے ایک جنگجو کو پستول اور موبائیل سمیت گرفتار کیا ہے اور اُس کو فوری طورپر جوائنٹ انٹروگیشن سینٹر منتقل کیا گیا۔ ذرائع نے بتایا کہ فورسز کو خفیہ اداروں سے اطلاع موصول ہوئی ہے کہ جنگ بندی معاہدے کی آڑ میں پاکستانی رینجرس نے اس طرف عسکریت پسندوں کو دھکیلا ہے جس کے بعد فورسز نے مینڈھر پونچھ کے کئی بالائی علاقوں کو محاصرے میں لے کر تلاشی آپریشن شروع کیا ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ زمینی آپریشن کے ساتھ ساتھ فضائی کی بھی خدمات حاصل کی گئی ہے اور علاقے پر پوری طرح سے نظر گزر رکھی جار ہی ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ فوج کو مصدقہ اطلاع ملی ہے کہ علاقے میں عسکریت پسندوں کا ایک گروپ چھپا بیٹھا ہے جس کو مد نظر رکھتے ہوئے فوج نے تمام داخلی اور خارجی راستوں پر پہرے بٹھا دئے ہیں جبکہ لوگوں سے تلقین کی گئی ہے کہ کسی بھی مسلح افراد کو دیکھتے ہی اس سلسلے میں پولیس اور فوج کو مطلع کریں۔ دفاعی ذرائع نے مینڈھر پونچھ میں بڑے پیمانے پر جنگجو مخالف آپریشن شروع کرنے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ مصدقہ اطلاع ملنے کے بعد ہی پونچھ کے ہرنی علاقے میں تلاشی لی گئی ۔ دفاعی ذرائع کے مطابق ایک جنگجو کو اسلحہ سمیت گرفتار کیا گیا ہے جبکہ آس پاس علاقوں کو بھی سیل کرکے مزید کمک کو طلب کیا گیا ہے۔ دفاعی ذرائع کے مطابق آخری اطلاعات موصول ہونے تک علاقے میں جنگجو مخالف آپریشن جاری تھا۔ مزید تفصیلات کا انتظار ہے۔ 

Please follow and like us:
1000

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *