0

ارینہ کے بعد کیرن سیکٹر میں جنگ بندی معاہدے کی خلاف وری

پاکستانی فوج نے سناءپر راءفل سے فوج کے ایک جوان کو نشانہ بناکر زخمی کردیا

سرینگر;21اکتوبر;ایس این این;پاکستانی رینجرس اور بی ایس ایف کے مابین فلیگ میٹنگ کے صرف 24گھنٹوں کے بعد ہی پاکستانی فوج نے ایک بار پھر جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوئے کیرن سیکٹر میں سناءپر سے گولی چلاکر ایک فوجی اہلکار کو نشانہ بناتے ہوئے زخمی کردیا ۔ سٹار نیوز نیٹ ورک کے مطابق پاکستانی فوج نے کیرن سیکٹر میں گولی چلاکر ایک فوجی اہلکار کو زخمی کردیا ۔ جبکہ اس سے پہلے ارینہ سیکٹر میں دو اہلکاروں پر گولیاں چلائی گئی تھیں ۔ ذراءع نے بتایا کہ کیرن سیکٹر میں ایل او سی کے قریب پاکستان نے ایک فوجی جوان کو سناءپر شاٹ سے نشانہ بنایا جس میں وہ زخمی ہو گیا ۔ بین الاقوامی سرحد (آئی بی) پر ارنیا سیکٹر میں جنگ بندی کی خلاف ورزی کے تین دن بعد اور بی ایس ایف اور پاک رینجرس کے مابین فلیگ میٹنگ کے 24گھنٹوں بعد پاکستان نے اب شمالی کشمیر کے کپواڑہ ضلع کے کیرن سیکٹر میں ایل او سی پر سرحد پار سے فائرنگ شروع کردی ہے ۔ سناءپر گولی لگنے سے فوج کا ایک سپاہی زخمی ہوا ہے ۔ ذراءع نے بتایا کہ جمعہ کو کیرن سیکٹر میں ایل او سی کے قریب پاکستان نے ایک فوجی جوان کو سناءپر شاٹ سے نشانہ بنایا جس میں وہ زخمی ہو گیا ۔ یہ واقعہ ایل او سی پر چاندنی پوسٹ کے قریب پیش آیا ۔ زخمی فوجی کو خصوصی علاج کے لیے سری نگر کے فوج کے 92 بیس اسپتال ریفر کیا گیا ہے ۔ ان کی حالت مستحکم بتائی جاتی ہے ۔ ذراءع کے مطابق زخمی سپاہی فوج کے 5;223;11 جی آر کے ساتھ تعینات ہے ۔ دریں اثناء فوج کی جانب سے اس واقعے کے حوالے سے کوئی باضابطہ بیان جاری نہیں کیا گیا ہے ۔ اس سے قبل منگل کو آئی بی پر ارنیا سیکٹر میں پاکستانی رینجرس کی فائرنگ میں بی ایس ایف کے دو جوان زخمی ہو گئے تھے ۔ جمعرات کو دونوں ممالک کے درمیان ہوئی فلیگ میٹنگ میں بی ایس ایف نے اس پر سخت اعتراض ظاہر کیا تھا ۔ واضح طور پر متنبہ کیا گیا کہ پاکستان ہر قیمت پر بلا اشتعال فائرنگ بند کرے ۔ دراندازی کے واقعات کو بھی روکیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں