0

اِنتظامیہ نے 31 اکتوبر کو’’ یوٹی یوم تاسیس‘‘ کے طور پر منانے کی تیاریاں شروع کیں

چیف سیکرٹری ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے آج یہاں سول اور پولیس اِنتظامیہ کی ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ منعقد کی جس میں 31 ;241;اکتوبر کو’’ یوٹی یوم تاسیس ‘‘کے طور پر منانے کی تیاریوں کا جائزہ لیا ۔

چیف سیکرٹری نے میٹنگ میں اِنتظامی سیکرٹریوں اور اعلیٰ سطح کے پولیس افسروں سے اس دن کو منانے کے طریقوں کے بارے میں ان کے خیالات طلب کئے ۔ اُنہوں نے محکموں پر زور دیا کہ وہ ان تمام مثبت تبدیلیوں کو ظاہر کرنے کے لئے تیاریاں کریں جو جموں و کشمیر یوٹی میں منتقلی کے بعد گذشتہ 4 برسوں سے جڑیں پکڑ رہی ہیں ۔

ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے کہاکہ انتظامیہ کی طرف سے ان برسوں کے دوران کئی دور رس اصلاحات اور فلاحی اقدامات عملائے گئے ہیں جس نے جموں و کشمیر کو اَپنے بنیادی ڈھانچے اور خدمات کو تیزی سے اَپ گریڈ کرنے کے قابل بنایا ہے ۔ انہوں نے اَفسران کومشورہ دیا کہ وہ ان تقریبات میں عام شہریوں اور پی آر آئی کے نمائندوں کو شامل کریں کیوں کہ آخر کار عوام ہی اس سے مستفید ہوتے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ سماجی، اقتصادی، بنیادی ڈھانچے اور دیگر شعبوں میں خاطر خواہ تبدیلیاں رونما ہوئی ہیں جن سے آگاہ کرنے کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے ان سے کہا کہ وہ عوام کی حوصلہ افزائی کریں کہ وہ اس دوران ہونے والی کسی بھی تبدیلی کی ویڈیو سامنے لائیں اور معیاری رائے دینے والوں کو اَنعام دیں ۔ اُنہوں نے کہا کہ تبدیلی کے بارے میں لوگوں کے خیالات کا احترام کیا جانا چاہئے ۔

ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے محکمہ آئی ٹی سے کہا کہ وہ عام لوگوں کی شرکت کے لئے ’’ مائی گو‘‘ پورٹل پر مقابلے شروع کرے ۔ اُنہوں نے محکمہ ثقافت کو ہدایت دی کہ وہ اس موقعہ پر پورے جموں وکشمیریوٹی میں ثقافتی تقریبات کا انعقاد کرے اور ہر ایک کو اپنی تخلیقی صلاحیتوں کا مظاہرہ کرنے کا موقعہ فراہم کرے ۔ اُنہوں نے محکمہ تعلیم پر زور دیا کہ وہ ان تقریبات میں ان طلباء کو شامل کرکے اَپنا کردار ادا کرے جو مستقبل کی فلاح و بہبود کے منتظر ہیں ۔

اُنہوں نے کہا کہ ای ۔ آفس، آن لائن خدمات، بیمز،پے سسٹم اوردیگر جیسے آئی ٹی اقدامات متعارف کروا کر شفاف، ذمہ دار اور جوابدہ حکمرانی کو یقینی بنانے کے علاوہ بڑے پیمانے پر بنیادی ڈھانچے کی اَپ گریڈیشن بھی کی گئی ہے ۔

اُنہوں نے کہا کہ اِس سے قبل ڈسٹرکٹ سیکٹر میں مکمل ہونے والے پروجیکٹ صرف 1,500کے قریب تھے جو کہ گذشتہ برس تقریباً 43,000 منصوبوں تک پہنچ گئے ہیں ۔ اُنہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر نے یوٹی بننے کے گذشتہ چار برسوں کے دوران تقریباً 2لاکھ منصوبوں کو مکمل کیا ہے ۔

ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے اس شفافیت کو اُجاگر کرنے پر بھی زور دیا جس کے ساتھ گذشتہ کچھ برسوں میں بھرتیاں کی گئی ہیں ۔

اُنہوں نے آر ڈی ڈی اور یو ایل بی پر زور دیا کہ وہ پنچایتوں اور وارڈوں کے ترقیاتی منظر نامے پر توجہ مرکوز کریں جیسا کہ لوگوں نے خود بیان کیا ہے ۔

محکموں سے یہ بھی کہا گیا تھا کہ وہ اتحاد پر توجہ مرکوز کریں اور یو ٹی کے ورثے اور تاریخی وراثت کا جشن منائیں ۔ سکول ایجوکیشن ڈپارٹمنٹ سے کہا گیا تھا کہ وہ طلبہ کی جانب سے ثقافتی تقریبات جیسے مصوری مقابلے، آرٹ اور فوٹوگرافی کی نمائشیں ، مباحثے اور کوئز منعقد کریں جہاں جیتنے والوں کو انعامات سے نوازا جائے گا ۔ ضلعی اِنتظامیہ تقریبات کے ایک حصے کے طور پر تمام سرکاری اداروں میں کمیونٹی سروس اور عطیات کی مہم بھی چلائے گی ۔

مقامی، ضلعی اورصوبائی سطح پر اِنتظامیہ کی جانب سے ’جے کے فاءونڈیشن ڈے ‘ ، جے کے ٹووارڈس ٹرانسپرینسی، پاورٹی فری جے کے ، جے کے پرائیڈ،کثرت میں وحدت جیسے ہیش ٹیگز کے ساتھ مختلف شعبوں میں یوٹی کی ہمہ جہت ترقی اور ترقی کو اُجاگر کرنے کے لئے سوشل میڈیا مہمات کا بھی اِنعقاد کیا جائے گا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں