0

تعلیمیافتہ اور ڈگری وڈپلومہ یافتہ نوجوانوں کو نجی اور خودروزگاراسکیموں کی جانب راغب کرنے کی جامع حکمت عملی

مختلف شعبوں کیلئے ہنر مند افراد کی تیاری پرتوجہ مرکوز
29 پولی ٹیکنک کالجوںاور84انڈسٹرئیل ٹریننگ انسٹی چیوٹس میں انجینئرنگ اورغیر انجینئرنگ کورسزمتعارف
سری نگر:۳، نومبر: جے کے این ایس : جموں وکشمیرمیںسرکاری سطح پرملازمتوں کی کمی کے بیچ بے روزگاری کے مسئلے سے نپٹنے کیلئے حکومت نے زیرتعلیم طلبہ اور نوجوانوں کی مختلف ہنروںمیں صلاحیت سازی پرتوجہ مرکوز کی ہے ،اورا س مقصد کیلئے پورے جموں وکشمیرمیں پولی ٹیکنک کالجوں اورانڈسٹرئیل ٹریننگ انسٹی چیوٹسITTsکا جال پھیلایاگیاہے ۔جے کے این ایس کے مطابق جموں وکشمیرمیں سرکاری محکموںمیں ملازمتوں کی کمی کے چلتے حکومت کیلئے تعلیم یافتہ اور مختلف ہنروں وشعبوںمیں ڈپلومہ وڈگری یافتہ نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنا حکومت کیلئے ایک بڑا چیلنج ہے ۔سرکاری اعدادوشمار کے مطابق اسوقت جموں وکشمیرمیں تین سے چار لاکھ پڑھے لکھے اور ڈگری وڈپلومہ یافتہ نوجوان بے روزگار ہیں ،اوران سبھی نوجوانوں کو سرکاری سیکٹر یعنی سرکاری محکموں اور اداروںمیں ملازمت یا نوکری فراہم کرنا مشکل ہی نہیں بلکہ تقریباً ناممکن ہے ۔حکومت نے ایسے نوجوانوں کو نجی یا خودروزگار کی جانب راغب کرنے کیلئے اسکل ڈیولپمنٹ ٹریننگ پروگراموں کے انعقاد پر توجہ مرکوز کی ہے جیسا کہ جموں و کشمیر حکومت کی طرف سے عوام کے نیٹ ورک کے ذریعے منظم طریقے سے تربیت اور سرٹیفیکیشن کے مناسب طریقہ کار کے ساتھ نجی اداروںکی توسط سے بڑھایا گیا ہے۔نئی تعلیمی پالیسی2020میں بھی اسبات پرزوردیاگیاہے کہ اسکولوں اورکالجوںمیں زیرتعلیم طلباءاور طالبات کو مروجہ تعلیم کیساتھ ساتھ مختلف ہنروںکی تربیت بھی فراہم کی جائے ،تاکہ تعلیم مکمل کرنے کے بعداُنھیں روزگارتلاش کرنے یااپنانے میںکسی قسم کی مشکل پیش نہ آئے ۔قومی تعلیمی پالیسی2020میں طلباءوطالبات کو مہارت کے صحیح سیٹ فراہم کرنے میں تعلیم کے کردار کو تسلیم کرتی ہے۔سرکاری ذرائع کہتے ہیں کہ حکومت نئی معیشت کے لئے بامعنی مہارت کی نشوونما کو بڑھانے اور جموں و کشمیر کے ہنر مندی کے ماحولیاتی نظام کو مضبوط بنانے کے لیے کوشاں ہے۔قابل ذکر بات یہ ہے کہ جموں و کشمیر میں 29 پولی ٹیکنک کالج ہیں جن میں 22 سرکاری شعبے میں اور7 نجی شعبے میں ہیں جو 20 انجینئرنگ، نان انجینئرنگ، پیرا میڈیکل اور سیاحت سے متعلق کورسز میں3 سالہ ڈپلومہ پروگرام پیش کر رہے ہیں۔اس کے علاوہ، ڈائریکٹوریٹ آف سکل ڈیولپمنٹ کے پاس53 سرکاری آئی ٹی آئیز اور 31 پرائیویٹ آئی ٹی آئیز ہیں جن میں71 نامزد کردہ ٹریڈز ہیں جن میں 25 انجینئرنگ ٹریڈز، 40 نان انجینئرنگ ٹریڈز بشمول8 ہیریٹیج کرافٹ کورسز اور 6 باقاعدہ قلیل مدتی کورسز ہیں جن میں711 ٹریڈ یونٹس کے ساتھ 15,416 نشستوںکی انٹیک گنجائش ہے۔، جن میں سے 2021-22 کے تعلیمی سیشن تک 14,250 طلباءوطالبات اندراج شدہ ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں