0

جموں وکشمیر میں بارشوں کی پیش گوئی، لوگوں کو جھلسانے والی گرمی سے راحت نصیب ہونے کا امکان

سری نگر، 4 جولائی : محکمہ موسمیات کی پیش گوئی کے مطابق 4 جولائی کی سہہ سے موسم کروٹ بدلنے سے وادی کشمیر میں لوگوں کو جھلسانے والی گرمی سے راحت نصیب ہونے کا امکان ہے۔متعلقہ محکمے کے ایک ترجمان نے بتایا کہ وادی میں سہہ پہر دیر گئے کہیں کہیں ہلکی سے درمیانی درجے کی بارشوں کا امکان ہے جس دوران جموں خطے میں کچھ مقامات پر بھاری بارشیں متوقع ہیں۔انہوں نے کہا کہ 5 اور 6 جولائی کو وسیع پیمانے پر رک رک کر ہلکی سے درمیانی درجے کی بارشوں کا امکان ہے۔ان کا کہنا تھا کہ جموں و کشمیر میں 7 جولائی کو بھی کئی مقامات پر رک رک کر بارشیں متوقع ہیں۔
ترجمان نے بتایا کہ بعد ازاں 8 سے 10 جولائی تک موسم ایک بار پھر گرم اور مرطوب رہنے کا امکان ہے تاہم اس دوران صبح اور شام کے وقت ہلکی بارشوں کو خارج از امکان قرار نہیں دیا جاسکتا ہے۔
محکمے نے اپنی ایڈوائزری میں کہا کہ جموں وکشمیر میں 4 سے 6 جولائی تک خطرناک مقامات پر سیلابی ریلے، مٹی کے تودے اور چٹانیں کھسکنے کا بھی امکان ہے۔انہوں نے کہا کہ نشیبی علاقوں میں عارضی طور پر پانی بھی جمع ہوسکتا ہے۔
دریں اثنا وادی میں شبانہ درجہ حرارت بھی مسلسل معمول سے زیادہ ریکارڈ ہو رہا ہے۔گرمائی دارلحکومت سری نگر میں کم سے کم درجہ حرارت23.5 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جو معمول سے6.2 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ ریکارڈ ہوا تھا۔
وادی کے شہرہ آفاق سیاحتی مقام گلمرگ میں کم سے کم درجہ حرارت15.0 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جو معمول سے3.9 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ ریکارڈ ہوا تھا۔وادی کے دوسرے مشہور سیاحتی مقام پہلگام میں کم سے کم درجہ حرارت15.1 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جو معمول سے3.7 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ ریکارڈ ہوا تھا۔سرحدی ضلع کپوارہ میں کم سے کم درجہ حرارت21.1 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جو معمول سے5.4 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ ریکارڈ ہوا تھا۔گیٹ وے آف کشمیر کے نام سے مشہور قصبہ قاضی گنڈ میں کم سے کم درجہ حرارت21.0 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا جو معمول سے5.3 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ ریکارڈ ہوا تھا۔
یو این آئی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں