0

جموں و کشمیر میں سیکورٹی کی صورتحال بہتر ہوئی ہے، دہشت گردی اپنی آخری سانسیں لے رہی ہے: ایل جی سنہا

سرینگر;23اکتوبر;وی او آئی;ایل جی منوج سنہا نے کہا ہے کہ جموں کشمیر میں ملٹنسی آخری سانس لے رہی ہے اور اقلیتی طبقہ کو خوفزدہ کرکے آسان ہدف کو نشانہ بنایا گیا تاہم اب حالات بہتر ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ میں اس بات کا دعویٰ کرسکتا ہوں کہ دہشت گردی اب آخری مرحلے میں ہیں اور جلد ہی پورا ختم کیا جائے گا ۔ وائس آف انڈیا کے مطابق جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے پیر کو کہا کہ مرکز کے زیر انتظام علاقے میں سیکورٹی کی صورتحال میں نمایاں بہتری آئی ہے یہاں دہشت گردی \;34;اپنی آخری سانسیں لے رہی ہے\;34; ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری پنڈت برادری سے تعلق رکھنے والے ملازمین کو رہائش کی ضروریات کے لیے وادی میں سستے داموں زمینیں فراہم کی جائیں گی ۔ سیکیورٹی کی صورتحال ماضی کے مقابلے میں بہتر ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میں اعتماد کے ساتھ، کہہ سکتا ہوں کہ دہشت گردی اپنی آخری سانسیں لے رہی ہے،‘‘ سنہا نے جموں شہر کے مضافات میں ماتا بھدرکالی کے مندرپر کشمیری پنڈتوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا ۔ سنہا نے کہا کہ ماضی میں دہشت گردوں نے کمیونٹی کے اندر خوف پیدا کرنے کے لیے نرم اور آسان ہدف کو نشانہ بنایا ہے ۔ \;34;پڑوسی ملک جان بوجھ کر جموں و کشمیر میں دہشت گردی کو زندہ رکھنے کی کوشش کر رہا ہے ۔ ہم کشمیری پنڈتوں اور اقلیتوں سمیت کمزور گروہوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کی ہر ممکن کوشش کر رہے ہیں ۔ پولیس اور سیکورٹی فورسز اس مقصد کے لیے انتھک محنت کر رہے ہیں ،‘‘ انہوں نے کہاکہ جموں میں مقیم ماتا بھدرکالی مندر، جو کہ شمالی کشمیر کے کپواڑہ ضلع میں واقع ایک مندر کی نقل ہے، نے مہا نومی منائی جس میں ایل جی سنہا اور جموں کے مختلف حصوں سے کشمیری پنڈتوں نے شرکت کی ۔ سنہا نے کہا کہ کشمیری پنڈت برادری کے سرکاری ملازمین کو رہائش کے مقاصد کے لیے سری نگر میں رعایتی نرخوں پر زمین کی پیشکش کی جائے گی ۔ انہوں نے کہاکہ \;34;ہم یقینی بنائیں گے کہ یہ انتظام فوری طور پر کیا جائے ۔ میری انتظامیہ اور دفتر کمیونٹی کے لوگوں کے لیے ان کے حقیقی تحفظات کو دور کرنے کے لیے کھلا ہے،‘‘ مزید برآں ، کشمیر میں کشمیری پنڈت برادری سے تعلق رکھنے والے ملازمین کے لیے رہائش کا انتظام کیا گیا ہے، اور مختص کرنے کا کام تیزی سے مکمل کیا جائے گا ۔ \;34;کشمیر بھر میں ان رہائش گاہوں پر سیکورٹی کے بہتر اقدامات نافذ کیے جائیں گے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ وزارت داخلہ کو ایک تجویز پیش کی گئی ہے اور ہ میں فوری جواب کی توقع ہے جس کے نتیجے میں اس پر عمل درآمد ہو گا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں