0

جموں و کشمیر کیلئے بجٹ مختص بڑھ کر 2022-23 میں 1,12,950 کروڑ روپے ہو گیا۔ وزارت داخلہ

سری نگر، 9 اکتوبر ۔ ایم این این۔ مرکزی وزارت داخلہ نے کہا ہے کہ جموں و کشمیر کے لیے مختص بجٹ کو 2019-20 میں 80,423 کروڑ روپے سے بڑھا کر 2022-23 میں 1,12,950 کروڑ روپے کر دیا گیا ہے تاکہ ہمہ جہت ترقی کو یقینی بنایا جا سکے۔ وزارت کی یکم اپریل 2022 سے 31 دسمبر 2022 تک 2022-23 کی سالانہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جموں و کشمیر کے لیے بجٹ مختص 2019-20 میں 80,423 کروڑ روپے سے مسلسل بڑھ گیا ہے، 20-2019 میں 92,341 کروڑ روپے ہوگیا ہے۔ جموں و کشمیر کے یو ٹی کی ہمہ جہت ترقی کو یقینی بنانے کے لیے 2020-21، 2021-22 میں 1,08,621 کروڑ روپے، 2022-23 میں 1,12,950 کروڑ روپے ہوگیا ہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جموں و کشمیر حکومت نے آئی ٹی سے چلنے والے ٹولز، مستقبل کی حکمت عملیوں، جمہوریت کو گہرا کرنے کے نئے اقدامات، گڈ گورننس، سرمایہ کاری کے مواقع اور سماجی اقتصادی ترقی کے ذریعے ہمہ گیر ترقی کو محفوظ بنانے اور خوشحالی لانے کے لیے سازگار ماحول پیدا کرنے کے لیے بڑے پیمانے پر اصلاحی پروگرام شروع کیے ہیں۔ اس میں کہا گیا ہے کہ جموں و کشمیر اب مرکزی اسپانسر شدہ اسکیموں کو نافذ کرنے میں ہندوستان کی سرفہرست ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں شامل ہے۔سوبھاگیہ ، اندرا دھنش،اجولا، اُجالا، پنشن اسکیمیں، طلباء کی اسکالرشپ، پی ایم مدرا یوجنا، پردھان منتری ماترو وندنا یوجنا، کشن کریڈٹ کارڈ، ون نیشن ون راشن کارڈ، پوشن واٹیکا جیسی اسکیمیں سیر ہو گئی ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں