0

جموں کشمیرمیں 6برسوں میں 27ہزار بچوں نے سکول چھوڑیا ہے

سکول چھوڑنے والے نوجوانوں کو پیشہ ورانہ تربیت فراہم کی جائے گی
سرینگر/24اکتوبر/ایس این این // جموں کشمیر میں اسے نوجوانوں کو ہنر مندبنایارہا ہے جنہوں نے کسی مجبوری کے سبب سکول چھوڑدیا ہو۔ گزشتہ چھ برسوں کے دوران 27ہزار سے زیادہ بچوں نے سکولی سطح سے ہی تعلیم چھوڑ دی ہے تاہم ان کو روزگار فراہم کرنے کی غرض سے ایسے نوجوانوں کیلئے مختلف صنعتوں کی پیشہ وارانہ تربیت فراہم کی جائے گی۔ سٹار نیوز نیٹ ورک کے مطابق سماگرا شکشا کے تحت ریاست میں اسکل ہب پہل شروع ہوئی۔ اس کا مقصد اسکول چھوڑنے والوں کو NSDC کے مصدقہ ہنر کے کورسز فراہم کرنا ہے اور انہیں پلیسمنٹ کے ساتھ ساتھ خود کاروبار کے لیے تیار کرنا ہے۔جموں و کشمیر میں اسکول چھوڑنے والوں کو ہنر مند بنایا جائے گا۔ سماگرا شکشا ایسے نوجوانوں کو مختلف پیشہ ورانہ تربیت دے گی۔ اس کے لیے ریاست میں اسکل ہب پہل شروع کی گئی ہے۔ 40 اسکولوں کو ہنر کے مرکز کے طور پر نامزد کیا گیا ہے۔ پائلٹ پروجیکٹ کے طور پر 9 سرکاری اسکولوں میں سکل ہب اقدام شروع کیا گیا ہے۔ یہ وزارت تعلیم اور ہنر مندی کی ترقی اور صنعت کاری کی وزارت کے مشترکہ زیراہتمام شروع کیا گیا ہے۔یہ پردھان منتری کشل وکاس یوجنا (PMKVY) 3.0 کا حصہ ہے، جو یکم جنوری سے ملک میں شروع ہوئی ہے۔ اس کا مقصد اسکول چھوڑنے والوں کو NSDC کے مصدقہ ہنر کے کورسز فراہم کرنا ہے اور انہیں پلیسمنٹ کے ساتھ ساتھ خود کاروبار کے لیے تیار کرنا ہے۔ پروجیکٹ ڈائریکٹر سماگرا شکشا دیپ راج نے کہا کہ اس اقدام کے لیے 40 اسکولوں کو نامزد کیا گیا ہے اور اس کی شروعات نو اسکولوں سے کی گئی ہے۔نئے سال میں تمام سکولوں میں بیک وقت ٹریننگ شروع کر دی گئی ہے۔ اسکیم سے فائدہ اٹھانے کے لیے اندراج مہم بھی چلائی جائے گی۔ ریاست میں چھ سالوں میں 27 ہزار سے زیادہ بچے اسکول چھوڑ چکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں