0

جموں کشمیر اور لداخ میں دشہرہ کی تقاریب منعقد کئی جگہوں پر 65فٹ سے زیادہ اونچے پتلے جلائے گئے

سرینگر/ 24اکتوبر/وی اوآئی //سخت حفاظتی انتظامات کے بیچ جموں کشمیر اور لداخ میں دشہرہ کا تہوار منایا گیا اور کئی جگہوں پر بڑے بڑے پتلے بنائے گئے تھے جن کو بعد میں جلا یا گیا۔ جموں و کشمیر سمیت لداخ میں 18 مقامات پر 54 پتلے جلائے گئے۔ گیتا بھون سے مجسمے مقررہ جگہوں پر بھیجے گئے ہیں۔ سناتن دھرم سبھا گیتا بھون کی طرف سے دو جھانوں (رام رتھ، ونار سینا) کا جلوس نکالا گیا۔ وائس آف انڈیاکے مطابق جموں میں نوراتری کی تکمیل کے ساتھ ہی 24 اکتوبر کو وجے دشمی منایاگیا۔پیر کی رات تک مختلف اداروں، میٹنگز اور سوسائٹیز کے عہدیداران پروگرام کو حتمی شکل دینے میں مصروف تھے۔ پولیس کی جانب سے انتظامات کا بھی جائزہ لیا گیا۔ شہر میں تین مقامات پر مرکزی پروگرام منعقد کیے گئے۔سب سے بڑی تقریب پریڈ میں منعقد ہوئی جہاں سب سے اونچا 65 فٹ لمبا راون کا پتلا قائم کی گیا تھا کمبھکرن اور میگھناد کے مجسمے 60 فٹ کے تھے۔گاندھی نگر میں راون کا 48 فٹ اور بقیہ 42 فٹ کا پتلا،سینک کالونی میں 40 فٹ لمبا اور 35 فٹ لمبا راون کے پتلے لگائیگئے تھے۔دیگر چار مقامات پر پلاؤڈا، جانی پور، تریکوٹہ نگر اور چھنی ہمت پر مجسموں کی اونچائی تقریباً 25 سے 30 فٹ تھی۔ وائس آف انڈیا کے مطابق جموں و کشمیر سمیت لداخ میں 18 مقامات پر 54 پتلے جلائے گئے۔ گیتا بھون سے مجسمے مقررہ جگہوں پر بھیجے گئے ہیں۔ سناتن دھرم سبھا گیتا بھون کی طرف سے دو جھانوں (رام رتھ، ونار سینا) کا جلوس نکالا گیا۔ یہ دیوان مندر رانی پارک سے شام تقریباً 4 بجے شروع ہو کر موتی بازار، راج تلک روڈ، پرانی منڈی، سٹی چوک سے ہوتا ہوا رگھوناتھ مندر جائے گا، پھر شالامار روڈ سے ہوتا ہوا شام 5:30 بجے پریڈ گراؤنڈ پہنچے گا اور پتلے تک پہنچے گا۔ تقریباً 5:45 بجے شام دہن ہو گا۔ اس سے پہلے کھیت میں پتوں کی تیاری کا کام جاری تھا۔ اوڈیشہ سے 6 لوگوں کی ٹیم دیر رات تک پنڈال میں مصروف رہی۔سیکیورٹی انتظامات مکمل کرنے کے ساتھ ساتھ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے فائر بریگیڈ اور ایمبولینس کے انتظامات کیے گئے تھے۔ ہجوم پر قابو پانے کے لیے ملازمین کو تعینات کیا گیا تھا۔ میونسپل کارپوریشن کی جانب سے پانی، بیت الخلاء اور صفائی کے انتظامات کئے گئے تھے۔ اعلیٰ حکام کے مطابق ہر تقریب کے مقام پر صفائی ستھرائی کی گئی ہے۔ پریڈ میں مہمانوں اور عام لوگوں کی سہولت کے لیے انتظامات مکمل کر لیے گئے ہیں۔عوام کی سہولت کے لیے ہر ممکن کوشش کی گئی ہے۔ کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے نمٹنے کے لیے فائر انجن اور ایمبولینسیں جائے وقوعہ پر موجود رہیں۔پتوں کی تنصیب کے لیے کرین سے لے کر چہرے کی صفائی اور صفائی تک کا کام کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ پانی اور بیت الخلاء کا بھی انتظام کیا گیا ہے۔ اس بار پریڈ میں پتلا جلایا گیا انتظامیہ کی جانب سے ہر قسم کی تیاریاں مکمل کر لی گئی تھیں اگلے سال فٹ بال کے میدان میں پروگرام منعقد کرنے کی اجازت دی جائے تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگ لطف اندوز ہو سکیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں