0

جے ڈی اے کے الاٹمنٹ سیکشن سے اصل ریکارڈ غائب معاملہ میں کرائم برانچ نے تحقیقات شروع کردی ، متعلقہ افسران سے تفصیلات طلب

سرینگر;20اکتوبر;ایس این این ;جموں و کشمیر پولیس کی کرائم برانچ نے جموں ڈیولپمنٹ اتھارٹی (جے ڈی اے) کی مختلف کالونیوں اور کمرشل کمپلیکس سے متعلق بڑی تعداد میں فائلوں کو غلط جگہ پر منتقل کرنے کی گہرائی سے تحقیقات شروع کی ہیں اور اس سلسلے میں متعلقہ افسران سے تفصیلات طلب کی ہیں ۔ مزید برآں تفتیشی ایجنسی نے تمام اسرار سے پردہ اٹھانے اور ذمہ داری کا تعین کرنے کے لیے رہائشی پلاٹوں اور کمرشل پراپرٹی کے الاٹیوں سے مدد طلب کی ہے ۔ ہاوَسنگ اینڈ اربن ڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ نے لیٹر نمبر ;728568245746865223+223;2023 مورخہ 31 اگست 2023 کے ذریعے اسپیشل ڈی جی پی کرائم برانچ سے ڈویلپمنٹ اتھارٹی جموں کے الاٹمنٹ سیکشن سے بڑی تعداد میں اصل ریکارڈ;223;فائلوں کی غلط جگہ پر تفصیلی تحقیقات کی درخواست کی تھی ۔ اس کے مطابق کرائم برانچ جموں کو ہدایات جاری کی گئیں ، جس نے معاملے کی گہرائی سے تحقیقات شروع کر دی ہیں اور یہاں تک کہ جموں ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے افسران سے تفصیلات طلب کی ہیں ، سرکاری ذراءع نے بتایا کہ جے ڈی اے کی رہائشی اور تجارتی املاک کا کوئی بھی الاٹی جس کے پاس اس معاملے کے بارے میں مخصوص معلومات ہیں وہ جاری تحقیقات میں مدد کے لیے کرائم برانچ جموں سے رجوع کر سکتا ہے\;34;، ذراءع نے کہاکہ جموں ڈیولپمنٹ اتھارٹی کا الاٹمنٹ سیکشن بنیادی طور پر الاٹمنٹ کے معاملات سے نمٹتا ہے ۔ رہائشی پلاٹوں ، کمرشل املاک، زمین کے پارسل وغیرہ کی مقررہ طریقہ کار کے مطابق الاٹمنٹ اور ریپوزٹری سے بڑی تعداد میں اصل فائلوں کا غائب ہونا انتہائی تشویشناک بات ہے ۔ انہوں نے انکشاف کیا کہ درخواست دہندگان عام لوگوں کی ایک بڑی تعداد ;746865; آفس کا بار بار دورہ کر رہی ہے خاص طور پر اپنے پلاٹوں ،جائیداد کے لیز ہولڈ حقوق کی منتقلی کے لیے لیکن انہیں اس وجہ سے تکلیف اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے کہ ڈیلنگ اسسٹنٹ اصل الاٹمنٹ کا پتہ لگانے میں اپنی نا اہلی کا اظہار کرتے ہیں ۔ اصل الاٹمنٹ ریکارڈ;223;فائلوں کی عدم دستیابی کی وجہ سے، عدالتی معاملات، تفتیش وغیرہ میں مختلف قانونی کارروائیوں میں تعمیل بھی متاثر ہو رہی ہے ذراءع نے کہاکہ معاملہ کرائم برانچ کو بھیج دیا گیا ہے ۔ جیسا کہ جے ڈی اے کی طرف سے گمشدہ ریکارڈ کی ذمہ داری طے کرنے کے لیے تشکیل دی گئی کمیٹی کوئی ٹھوس رپورٹ پیش کرنے میں ناکام رہی ہے ۔ کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں ذکر کیا ہے، \;34;چونکہ الاٹمنٹ سے متعلق فائلوں کے غائب ہونے کی مدت کا تعین نہیں کیا جا سکا، اس لیے ہم مجرموں کے اہلکار;223;ڈیلنگ اسسٹنٹ کی ذمہ داری طے کرنے سے قاصر ہیں کیونکہ جے ڈی اے کے بہت سے ملازمین نے ڈیلنگ اسسٹنٹ کے طور پر کام کیا ہے ۔ وقتاً فوقتاً الاٹمنٹ سیکشن میں اور ان میں سے کچھ سروس سے ریٹائر بھی ہو چکے ہیں ۔ تاہم، کمیٹی نے گمشدہ;223;ناقابل تلاش فائلوں کے ایسے معاملات میں متبادل فائلوں کی تعمیر نو کی سفارش کی جہاں درخواست دہندگان تمام قانونی تحفظات اور مطلوبہ اصل دستاویزات لے کر دفتر پہنچ رہے ہیں جیسا کہ پہلے بھی کیا گیا تھا ۔ \;34;جے ڈی اے کے بے بنیاد لیزوں کو درپیش تکلیف اور مشکلات کو کم کرنے کے لئے، فائل کی تعمیر نو کے لئے آگے بڑھنے کا راستہ ضروری معلوم ہوتا ہے ۔ دریں اثنا، حکومت کے ذریعے جے ڈی اے کے الاٹمنٹ سیکشن کے گمشدہ ریکارڈز;223;فائلوں کی تعمیر نو کے لیے افسران کی ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ۔ 2023 کے آرڈر نمبر 144;2457475;(;728568;) مورخہ 31;46;08;46;2023 میں ہدایت کی گئی ہے کہ وہ فزیبلٹی کے حوالے سے محکمہ قانون، انصاف اور پارلیمانی امور کو ساتھ لے کر ریکارڈ کی تعمیر نو کے عمل میں شفافیت اور چیک اینڈ بیلنس کو یقینی بنائے ۔ اور ریکارڈز;223;فائلوں کی قانونی حیثیت، اگر دوبارہ تعمیر کی گئی ہو، اور وہ حفاظتی اقدامات جو اس طرح کی مشق کو انجام دینے کے لیے اختیار کیے جانے والے طریقہ کار میں شامل کیے جا سکتے ہیں ۔ \;34;کمیٹی کو اس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ الاٹمنٹ حقیقی ہے، نہ تو منسوخ کی گئی ہے اور نہ ہی بے ضابطگی یا اینٹی کرپشن بیورو اور کرائم برانچ وغیرہ کے سامنے زیر التواء تحقیقات\;34;، ہاوَسنگ اینڈ اربن ڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ نے حکم نامے میں کہا ہے، \;34;کمیٹی کو عوام کے سامنے رکھنا چاہیے ۔ وقفے وقفے سے ڈومین، اعتراضات کو مدعو کرنے کے لیے دوبارہ ترتیب دیے گئے ریکارڈز;223;فائلوں کی تفصیلات اور اعتراضات پر غور کرنے کے بعد، اگر کوئی ہے تو، ایسے کیسز پر مزید کارروائی کی سفارش کرنی چاہیے ۔ کمیٹی کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ ماہ میں کم از کم ایک بار اپنا اجلاس منعقد کرے تاکہ تعمیر نو کی پیش رفت کی نگرانی کی جا سکے اور ایسے معاملات کا فیصلہ کیا جا سکے ۔ مزید یہ کہ ماہانہ پراگریس رپورٹ ایڈمنسٹریٹو ڈیپارٹمنٹ کو پیش کرنی ہوگی ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں