0

حماس کے حملے میں ہلاکتوں کی تعداد 300 سے تجاوز،1500 سےزخمی

تل ابیب، 8 اکتوبر (یو این آئی) فلسطینی مزاحمتی تحریک حماس کے حملے میں اسرائیل میں مرنے والوں کی تعداد 300 سے زیادہ تجاوز کرگئی ہے اور 1500 سے زیادہ لوگ زخمی ہو گئے ہیں یہ اطلاع اسرائیلی میڈیا کی رپورٹ میں دی گئی اسرائیلی اخبار یروشلم پوسٹ نے ملکی وزارت صحت کے حوالے سے خبر دی ہے کہ اس تنازعے میں اب تک ہلاکتوں کی تعداد 300 سے تجاوز کر گئی ہے اور 1500 سے زائد افراد زخمی ہو چکے ہیں۔

اخبار نے ہفتے کے روز مرنے والوں کی تعداد 250 اور زخمیوں کی تعداد 1,452 بتائی ہے۔

فلسطینی مزاحمتی تحریک حماس کے اسرائیل پر زمین، سمندر اور فضا سے حملے جاری ہیں جس میں اب تک300 اسرائیلی ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ 200فلسطینی بھی شہید ہوگئے۔

اسرائیلی حکام نے ہلاکتوں کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ حماس کے حملوں میں 1500 سےزائد اسرائیلی زخمی ہوئے،

دوسری جانب حماس کے ترجمان نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ہم نے مسجد اقصیٰ کی بےحرمتی اور یہودی آباد کاروں کی جارحیت کے ردعمل میں آپریشن کیا ہے۔ترجمان نے بتایا کہ درجنوں اسرائیلی فوجیوں کو یرغمال بنالیا گیا ہے، یرغمال اسرائیلی فوجیوں کو سرنگوں اور محفوظ مقامات پر رکھا گیا ہے۔

مقامی حکام کے مطابق غزہ پراسرائیلی فضائی حملے جاری ہیں جس میں 200کے قریب فلسطینی شہید اور 1600سے زائد زخمی ہوئے ہیں، فلسطینی میڈیا نے اپنی رپورٹ میں بتایا کہ اسرائیلی طیاروں کی جانب سے حماس کے غزہ کے سربراہ یحییٰ السنوار کے خان یونس کے گھر پر بمباری کی گئی ہے۔

اس حوالے سے غیرملکی خبر رساں ایجنسی نے بتایا کہ مقبوضہ مغربی کنارے میں بچے سمیت 4فلسطینی شہید کردیئے گئے، شہید بچےکی عمر 13برس ہے جس کو اسرائیلی فوجیوں نے نشانہ بنایا۔

واضح رہے کہ یہ کارروائی گذشتہ کئی برسوں میں اسرائیل فلسطین تنازع میں ہونے والی شدید ترین کشیدگی میں سے ایک ہے۔

حماس کے جنگجو صبح سحر کے وقت غزہ کے علاقے سے اسرائیل میں داخل ہوئے۔ عینی شاہدین کے مطابق وہ موٹر سائیکلوں، پیراگلائیڈرز اور کشتیوں پر بھی اسرائیل میں داخل ہوئے۔ ایسے کسی حملے کی اس سے پہلے نظیر نہیں ملتی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں