0

سال 2024میں کشمیر کو ریل نیٹ ورک سے جوڑا جارہا ہے

ادھم پور،بارہمولہ ریل سیکشن پر 272 کلومیٹر طویل ریل ٹریک پر 80فیصدی کام مکمل
سرینگر/25اکتوبر/وی او آئی//سال نو میں کشمیر کو ملک کے دیگر حصوں سیریل کے ذریعے جوڑا جارہا ہے اور اس سلسلے میں 272کلو میٹر ٹریک بچھایا جارہا ہے جس میں سے 181کلومیٹر کاکام مکمل ہوچکا ہے اور باقی ماندہ کام رواں برس مکمل کیا جائے گا۔ وائس آف انڈیا کے مطابق جموں و کشمیر کو نئے سال میں ریلوے کے بہت سے تحفے ملیں گے۔ 2024 میں وادی کشمیر کو ملک کے دیگر حصوں سے ریل کے ذریعے جوڑ دیا جائے گا۔ ادھم پور-بارہمولہ ریل سیکشن پر 272 کلومیٹر طویل ریل ٹریک بچھایا جا رہا ہے۔ اس میں 181 کلومیٹر کا کام مکمل ہو چکا ہے۔ اس حصے پر بنائے جانے والے 1.3 کلومیٹر لمبے اور 359 میٹر اونچے پل کے دونوں سروں پر آرکس شامل کیے گئے ہیں۔1,486 کروڑ روپے کی لاگت سے تیار ہونے والے اس پل کی تعمیر نئے سال میں مکمل ہو جائے گی۔ پل کی تعمیر مکمل ہونے سے ٹرین وادی تک پہنچے گی۔ اس کے ساتھ ہی جموں ریلوے اسٹیشن کے دوسرے داخلی دروازے کی تعمیر کا کام بھی نئے سال میں شروع ہوگا۔ جموں اسٹیشن پر نروال کی طرف سے ایک نئی انٹری کی جائے گی۔ اس میں چار پلیٹ فارم ہیں، ہوائی اڈے جیسا لاؤنج، اوور اور انڈر برج جو نئے اور پرانے پلیٹ فارم کو آپس میں جوڑیں گے۔ یہ کام 266 کروڑ کی لاگت سے کیا جائے گا۔بانہال سے بارہمولہ تک 136 کلومیٹر ریلوے لائن کی برقی کاری کا کام مارچ 2022 تک مکمل ہو جائے گا۔وجے پور، سامبا میں وہیکل آٹومیٹڈ فٹنس ٹیسٹنگ انسپکشن اینڈ سرٹیفیکیشن سینٹر کا تعمیراتی کام مکمل ہونے کی امید ہے۔ 2017 میں اس کے لیے 9.82 کروڑ روپے جاری کیے گئے تھے۔ اس پراجیکٹ میں سول ورک مکمل ہو چکا ہے۔ مشینری کی تنصیب کے لیے ٹینڈر جاری کیے جا رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں