0

سرمد حفیظ نے سری نگر میں نیشنل تھانگ تا چیمپئن شپ کا آغاز کی

ا
سری نگر، 3 اکتوبر ۔ ایم این این۔ سیکرٹری یوتھ سروس اینڈ اسپورٹس سرمد حفیظ نے آج پولو گراؤنڈ سری نگر کے ملٹی پرپز انڈور ہال میں 29 ویں جونیئر نیشنل تھانگ تا چیمپئن شپ 2023 کا آغاز کیا۔جے اینڈ کے اسپورٹس کونسل کے زیر اہتمام ہونے والے اس ایونٹ کا انعقاد جے اینڈ کے تھانگ تا ایسوسی ایشن نے تھانگ تا فیڈریشن آف انڈیا کی نگرانی میں کیا ہے۔تین روز تک جاری رہنے والے ایونٹ میں ملک کے مختلف حصوں سے 25 ٹیموں میں شامل 530 کے قریب شرکا حصہ لے رہے ہیں۔سیکرٹری جموں و کشمیر سپورٹس کونسل نزہت گل تقریب کی مہمان خصوصی تھیں۔سینئر افسران کے ساتھ ورلڈ تھانگ تا فیڈریشن کے گرینڈ ماسٹر ایچ پریم کمار سنگھ اور ونود شرما، سکریٹری تھانگ تافیڈریشن آف انڈیا کے ساتھ ملک کے دیگر حصوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں سے آنے والے دیگر معزز مہمان بھی موجود تھے۔اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے سرمد حفیظ نے کہا کہ یہ تقریب اس پالیسی کی توسیع ہے جس کے تحت جموں و کشمیر نے مرکز کے زیر انتظام علاقے میں زیادہ سے زیادہ قومی اور بین الاقوامی ایونٹس لانے کی کوشش کی تھی۔ اس ایونٹ کے لیے، جے اینڈ کے اسپورٹس کونسل نے جے اینڈ کے تھانگ تا ایسوسی ایشن اور تھانگ ٹا فیڈریشن آف انڈیا کے ساتھ تعاون کیا۔انہوں نے اس شاندار ایونٹ کی میزبانی میں اسپورٹس کونسل کی کوششوں کی تعریف کی جس کا مقصد جموں و کشمیر کے مقامی تھانگ تا صلاحیت کو پہچاننا اور ان کو فروغ دینا ہے اور ساتھ ہی قومی اور بین الاقوامی مقابلوں میں ان کی شرکت کی حوصلہ افزائی کرنا ہے۔ انہوں نے صحیح تناظر میں کھیلوں کی صلاحیتوں کو پروان چڑھانے کے لیے اس طرح کے ایونٹس کی اہمیت پر زور دیا۔سرمد حفیظ نے کہا کہ انتظامیہ نوجوانوں کو ایک پلیٹ فارم مہیا کرنے اور جموں و کشمیر میں مختلف تقریبات کا انعقاد کرکے ان کے مقاصد پر عمل کرنے میں ان کی مدد کرنے میں ہمیشہ سب سے آگے رہی ہے۔سیکرٹری اسپورٹس کونسل نے کھلاڑیوں کی تعریف کرتے ہوئے ان کی صلاحیتوں کو اجاگر کیا کہ وہ کھیل کے لیے اپنے جذبے سے دوسروں کو متاثر کریں۔ انہوں نے کہا کہ کھلاڑی نہ صرف اپنی غیر معمولی صلاحیتوں کا مظاہرہ کرتے ہیں بلکہ دوسروں کو بھی اپنے خوابوں اور جذبوں کو آگے بڑھانے کی ترغیب دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ چیمپئن شپ ایک ایسا پلیٹ فارم بننے کا وعدہ کرتی ہے جہاں تھانگ تا میں ابھرتا ہوا ٹیلنٹ چمک سکتا ہے۔ نزہت گل نے نتیجہ اخذ کیا، “اس طرح کی تقریبات ملک بھر کے نوجوانوں کو ایک دوسرے سے بات چیت کرنے اور مختلف ثقافتوں کے بارے میں جاننے کا بہترین موقع فراہم کرتی ہیں۔”دریں اثنا، جموں و کشمیر اسپورٹس کونسل نے ایونٹ کی نگرانی اور تمام شرکاء کو رجسٹر کرنے کے لیے ڈویژنل اسپورٹس آفیسر (کشمیر) کی سربراہی میں ایک کمیٹی بھی تشکیل دی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں