0

سرینگر جموں شاہراہ پر ٹریفک کے دباؤ کو کم کرنے کیلئے متبادل راستے اپنائے جارہے ہیں / نتن گڈکری

وادی کشمیر کو خطہ چناب سے براہ راست جوڑنے کیلئے قومی شاہراہ کے کام میں توسیع

سرینگر /30ستمبر/ ایس این این //مرکزی وزیر ٹرانسپورٹ نتن گڈکری نے کہا ہے کہ جموں کشمیر نیشنل ہائی وے کو وسعت دینے کا کام شروع کیا گیا ہے اور اس ضمن انہوں نے کہا کہ سدھ مہادیو روڑ چنانی کو اننت ناگ سے جوڑے گا اور یہ ڈوڈہ، بھدرواہ، کشتواڑ اور سمتھن ٹاپ کو آپس میں جوڑ کر ڈوڈہ کو کشمیر سے متبادل راستہ فراہم کرے گا۔ سٹار نیو ز نیٹ ورک کے مطابق روڈ ٹرانسپورٹ اور ہائی ویز کے مرکزی وزیر نتن گڈکری نے آج اعلان کیا کہ ان کی وزارت جموں و کشمیر میں قومی شاہراہ 244 پر چنانی سدھمہادیو سیکشن کو توسیع اور بڑھا رہی ہے۔وزیر موصوف نے کام کی توسیع کا اشتراک کرنے کے لیے ”ٹویٹر“ ایکس پر کام کی توسیعی کام کی تصاویر شیر کرتے ہوئے لکھا ہے کہ جموں سرینگر شاہراہ سے ٹریفک کے دباؤکو کم کرنے کیلئے متبادل راستے تلاش کئے جارہے ہیں۔ ادھر ایل جی جموں و کشمیر کے دفتر نے توسیعی کام کے بارے میں گڈکری کی معلومات کو دوبارہ پوسٹ کیا جو چنانی کو اننت ناگ ضلع میں سدھمہادیو، مانتلائی، ڈوڈا، بھدرواہ، کشتواڑ اور سنتھن ٹاپ سے جوڑ دے گا اور اسے ڈوڈا اور کشمیر کا متبادل راستہ بنائے گا، جس سے فاصلہ تیزی سے کم ہوگا۔ا س ضمن میں مرکزی وزیر نتن گڈکری نے مزید لکھا ہے کہ جموں اور کشمیر میں ہم قومی شاہراہ 244 پر چنانی-سدھمہادیو سیکشن کو پھیلا رہے ہیں اور اسے بڑھا رہے ہیں، اسے 2 لین والی سڑک میں پکی کندھوں کے ساتھ تشکیل دے رہے ہیں۔ یہ اہم اقدام، فیز 1 کے تحت آتا ہے، 16.99 کلومیٹر کی لمبائی پر محیط ہے۔انہوں نے کہا کہ اپ گریڈ شدہ ہائی وے سال بھر تک رسائی فراہم کرنے کے لیے تیار ہے، ایک ایسی ترقی جس سے مقامی معیشت اور علاقے کے رہائشیوں کو کافی فائدہ پہنچے گا۔گڈکری نے کہاکہ وزیر اعظم نریندر مودی کے وژن کی رہنمائی میں یہ پروجیکٹ جموں اور کشمیر میں موثر، پریشانی سے پاک اور ماحولیاتی ذمہ دارانہ نقل و حرکت کے حصول کے لیے وقف ہے۔دریں اثنا، وزیر اعظم کے دفتر (پی ایم او) میں مرکزی وزیر مملکت ڈاکٹر جتیندر سنگھ، جو ڈوڈا-ادھم پور-کٹھوا حلقہ سے لوک سبھا کے رکن بھی ہیں نے اس پروجیکٹ کے لیے وزیر اعظم نریندر مودی اور نتن گڈکری کا شکریہ ادا کیا۔یہ پروجیکٹ چنانی سے سدھمہادیو (قومی شاہراہ-244) تک دو لین سڑک کے 16.99 کلومیٹر طویل حصے پر مرکوز ہے۔منصوبے کے دائرہ کار میں ایک بڑے پل، دو چھوٹے پل، 16 کلورٹس، ایک گاڑیوں کا انڈر پاس، ایک پیدل انڈر پاس، اور دو بس بیز کی تعمیر شامل ہے۔اس منصوبے کو نیشنل ہائی ویز اینڈ انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ کارپوریشن لمیٹڈ (این ایچ آئی ڈی سی ایل) کے ذریعے چلایا جا رہا ہے۔بنیادی ڈھانچے کو بہتر بنانے کے علاوہ، یہ منصوبہ چنانی اور سدھمہادیو کے دور دراز علاقوں تک سال بھر رسائی فراہم کرنے کے لیے تیار ہے، جو دونوں اپنی مذہبی اور تاریخی اہمیت کے لیے مشہور ہیں۔بہتر رابطے سے مقامی معیشت کو نمایاں فروغ ملے گا، سیاحت کو فروغ ملے گا، تجارت میں سہولت ملے گی اور خطے میں روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔اس کے بنیادی طور پر، یہ پروجیکٹ جموں و کشمیر میں موثر، پریشانی سے پاک، اور ماحولیاتی طور پر ذمہ دارانہ نقل و حرکت کے حصول کے وزیر اعظم نریندر مودی کے وڑن سے ہم آہنگ ہے، بالآخر اس کے باشندوں کے معیار زندگی کو بہتر بناتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں