0

سعودی عرب ہندوستان کے سب سے اہم اسٹریٹجک شراکت داروں میں شامل ہے۔ پی ایم مودی

نئی دہلی ۔ 11؍ ستمبر۔ ایم این این۔ وزیر اعظم نریندر مودی اور سعودی عرب کے ولی عہد محمد بن سلمان آل سعود نے پیر کو ہندوستان-سعودی عرب اسٹریٹجک پارٹنرشپ کونسل کے رہنماؤں کی پہلی میٹنگ کی اور اس طرح کے شعبوں میں تعاون پر تبادلہ خیال کیا۔ توانائی کی حفاظت، تجارت اور سرمایہ کاری، دفاع اور سلامتی، صحت کی دیکھ بھال اور خوراک کی حفاظت جیسے مدعوں پر بات چیت کیگ ئی۔ پی ایم مودی نے اپنے ابتدائی کلمات میں کہا کہ دورہ پر آئے ہوئے سعودی عرب کے رہنما کے ساتھ بات چیت سے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو نئی توانائی اور سمت ملے گی۔”ہندوستان کے لیے، سعودی عرب اس کے اہم ترین اسٹریٹجک شراکت داروں میں سے ایک ہے۔ دنیا کی دو بڑی اور تیزی سے ترقی کرتی ہوئی معیشتوں کے طور پر ہمارا باہمی تعاون پورے خطے میں امن اور استحکام کے لیے اہم ہے۔ ہماری بات چیت میں، ہم نے اپنی شراکت داری کو اگلی سطح تک لے جانے کے لیے کئی اقدامات کی نشاندہی کی ہے۔ آج کی بات چیت ہمارے تعلقات کو نئی توانائی اور سمت فراہم کرے گی۔ اس سے ہمیں انسانیت کی فلاح و بہبود کے لیے مل کر کام کرنے کی ترغیب ملے گی۔ پی ایم مودی نے کہا کہ ہندوستان، مغربی ایشیا اور یورپ کے درمیان اقتصادی راہداری ان خطوں کے درمیان اقتصادی ترقی اور ڈیجیٹل کنیکٹیویٹی فراہم کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کے درمیان تعاون اور اقتصادی شعبے میں سعودی عرب پورے خطے کے امن و استحکام کے لیے ناگزیر ہے۔ کل ہم نے ہندوستان، مغربی ایشیا اور یورپ کے درمیان ایک تاریخی اقتصادی راہداری شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ کوریڈور نہ صرف دو ممالک کو جوڑے گا بلکہ ایشیا، مغربی ایشیا اور یورپ کے درمیان اقتصادی ترقی اور ڈیجیٹل کنیکٹیویٹی فراہم کرنے میں بھی مدد کرے گا۔ آپ کی قیادت اور وژن 2030 کے تحت سعودی عرب نے زبردست اقتصادی ترقی دیکھی ہے اور میں آپ کو اس کے لیے مبارکباد پیش کرتا ہوں۔‘‘ پی ایم مودی نے ہندوستان کی جی 20 صدارت کی کامیابی میں سعودی عرب کے تعاون کے لیے بھی مہمان رہنما کا شکریہ ادا کیا۔انھوں نے سعودی عرب کے ولی عہد کے عزم یا سعودی عرب میں مقیم ہندوستانیوں کی فلاح و بہبود کیلئے بھی ان کا شکریہ ادا کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں