0

شادی کے دن فرار ہونے والادلہاہنوز سلاخوں کے پیچھے

عدالت نے دلہے کی ضمانتی درخواست کو رد کردیا

سرینگر;;11اکتوبر;وی او آئی;شادی کے دن فرار ہونے والے دلہا کی ضمانتی درخواست کو عدالت نے مسترد کرتے ہوئے اسے مزید وقت کےلئے جوڈیشل ریمانڈ میں رکھنے کا حکم دیتے ہوئے سنٹرل جیل بھیج دیا ہے ۔ وائس آف انڈیا کے مطابق چار سال تک منگنی میں رہنے کے بعد شادی کے دن بارات لینے سے انکار کرنے والے اور فرار ہونے والے دلہے کی ضمانتی درخواست کو عدالت نے مسترد کردیا ۔ پولیس نے اپنی رپورٹ میں لکھا ہے کہ بارات لینے سے انکار کرنے اور شادی کے دن غائب رہنے کی وجہ مبینہ طور پرجہیز کا مطالبہ تھا ۔ اونتی پورہ کے ایڈیشنل اسپیشل موبائل مجسٹریٹ نے دولہا اور اس کے والد کی ضمانت سے انکار کرتے ہوئے معاشرے پر کیس کے ممکنہ اثرات کے بارے میں خدشات کا اظہار کیا ۔ مبینہ واقعہ سماجی تانے بانے میں خلل ڈالنے اور اخلاقی اقدار کے لیے خطرہ بننے کی صلاحیت رکھتا ہے ۔ عدالت نے کہا ہے کہ ہ میں ملزم کی رہائی کا کوئی جواز نہیں ملتا، خاص طور پر ایسی صورت حال میں جہاں عوامی احتجاج اور ممکنہ امن و امان کے مسائل موجود ہیں ۔ یاد رہے کہ اونتی پورہ میں ستمبر 2023 میں یہ واقع پیش آیا تھا ۔ اُس روز دلہے کے گھر والوں کی طرف سے لڑکی والوں سے کہا گیا تھا کہ دلہا فرار ہوچکا ہے ۔ ذراءع کے مطابق دلہا نے لڑکی والوں سے جہیز کا مطالبہ کیا تھا جس کو دینے سے انکار کرنے کے بعد دلہا بارات لیکر نہیں گیا اور اس طرح سے ایک شادی کی تقریب دنیا کےلئے تماشہ بن گئی تھی خاص کر سوشل میڈیا اور فیس بک چلانے والوں نے اپنی ٹی آر پی بڑھانے کےلئے اس معاملے کو اس طرح اُچھالا کہ لڑکی اور اس کے اہلخانہ کو شدید ذہنی کوفت کا سامنا کرنا پڑا ۔ عدالت نے اس معاملے کو سماج کےلئے اہم قراردیتے ہوئے اس شخص کی ضمانتی درخواست مسترد کردی ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں