0

شہر سرینگر کے ساتھ ساتھ وادی کے دیگر اضلاع میں بجلی کی عدم دستیابی سے مچی ہاہار کار

موسم سرما کیلئے نئے کٹوتی شیڈول کا اعلان اگلے کچھ دنوں میں متوقع

بجلی کی بڑھتی ہوئی طلب کو پورا کرنے کیلئے اضافی خریداری کیلئے بات چیت ، اسی حساب سے شیڈول لاگو ہوگا

سرینگر ;223;12اکتوبر ;223; ایس این این ;223223;موسم سرما کی آمد سے قبل ہی وادی کے ہر سو بجلی کی عدم دستیابی کے خلاف صارفین میں غم و غصہ کی لہر کے بیچ کشمیر پاور ڈسٹری بیوشن کارپوریشن لمیٹیڈ 14 اکتوبر تک موسم سرما کیلئے بجلی کٹوتی شیڈول کا اعلان کرنے جا رہی ہے ۔ اسی دوران محکمہ کے پی ڈی سی ایل کا کہنا ہے کہ کشمیر میں بجلی کی پیدا وار کو بڑھانے کیلئے اسٹیک ہولڈرس سے بات چیت جاری ہے اور بجلی کی دستیابی کے حساب سے ہی شیڈول کا اعلان کیا جائے گا ۔ سٹار نیوز نیٹ ورک کے مطابق وادی کے شمال و جنوب میں بجلی کی عدم دستیابی کے خلاف لوگوں کی ہا ہا کار کے بیچ محکمہ بجلی 14اکتوبر سے موسم سرما کیلئے بجلی کٹوتی شیڈول کا اعلان کرنے جا رہی ہے ۔ شہر سرینگر کے ساتھ ساتھ وادی کے دیگر علاقوں میں سمارٹ میٹروں کی تنصیب کا کام جاری ہے تاہم اس کے باوجود بھی صارفین بجلی نہ ہونے پر نالاں ہے اور الزام عائد کر رہے کہ شام ہوتی ہی بجلی کی عدم دستیابی سے سو اندھیرا چھا جاتا ہے ۔ ادھر کشمیر پاور ڈسٹری بیوشن کارپوریشن لمیٹیڈ نے بھی 14 اکتوبر تک موسم سرما کیلئے بجلی کٹوتی شیڈول کے اعلان کیلئے کمس کس لی ہے اور اس بات کا قوی امکان ہے کہ 14اکتوبر کے بعد نئے بجلی شیڈول کا اعلان کیا جائے گا ۔ ذراءع نے بتایا کہ بجلی کی کٹوتی کے شیڈول کا ابھی اعلان نہیں کیا گیا ہے، لیکن ہفتہ تک ہو جائےگا ۔ ذراءع نے بتایا کہ محکمہ فی الحال بجلی کی بڑھتی ہوئی طلب کو پورا کرنے کیلئے اضافی بجلی کی خریداری کیلئے بات چیت کر رہا ہے ۔ اس سلسلے میں ہفتہ تک مثبت ردعمل کی توقع ہے جس کے بعد بجلی کی دستیابی کے مطابق کٹوتی کے شیڈول کا اعلان کیا جائے گا ۔ ذراءع نے بتایا کہ بجلی کٹوتی کا شیڈول پچھلے سال کے برابر ہوگا ۔ کسی اضافی کٹوتیوں کی توقع نہیں ہے ۔ تاہم، حکومت نے پہلے کہا تھا کہ اتر پردیش اور مرکزی حکومتوں سے 400 میگا واٹ بجلی منگوائی گئی ہے، جس سے بجلی کی پریشان کن کٹوتیوں کو ختم کیا جائے گا ۔ فی الحال صارفین کو مسلسل بجلی کی کٹوتی کا سامنا ہے جس کے نتیجے میں انہیں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں