0

صحت ،معیشت اور ماحولیات کیلئے سود مند سمارٹ ساءکلنگ اب شہریوں کیلئے فیشن

5 مہینوں میں 40000 شہریوں نے سائیکل سروس اختیارکی

سرینگر;5اکتوبر;223; ٹی ای این ; شہر سرینگر کو سمارٹ خطوط پر ترقی دینے کے سرکاری منصوبوں میں سے ایک سمارٹ سائیکلنگ سے صحت اور ماحولیات پر مثبت اثرات نظر آنے لگے ہیں ۔ شہری آبادی خصوصا نوجوان طبقہ اس سمارٹ سائیکلنگ سے زیادہ سے زیادہ استفادہ کرنے لگے ہیں ۔ ٹی ای این کے مطابق مئی2023سے اب تک تقریبا40000افراد نے شہر کے اندر آنے جانے کے لیے اس سروس کے لیے خود کو رجسٹر کرایا ہے ۔ چارٹرڈ بائیکس کے سری نگر میں قائم آفس اہلکارنے بتایا کہ تقریباً 39980 صارفین نے ایپ کے ساتھ اپنا اندراج کرایا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ہم خدمت کے لیے زبردست ردعمل کا مشاہدہ کر رہے ہیں ۔ اب تک 39980 سری نگر کے لوگوں نے ہماری ایپ کے ذریعے سروس کے لیے رجسٹریشن کی درخواست کی ہے ۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ شہر کے اندر روزانہ 1000 سے زیادہ لوگ سائیکلوں کے ذریعے سفر کرتے ہیں ۔ کمپنی کے مطابق شہر کے اندر 20 مزید سٹیشن آ رہے ہیں ، جو ان کے بقول سروس کو مزید مقبول بنائیں گے ۔ کمپنی ترجمان کا کہنا ہے کہ انہوں نے 20 مقامات کی نشاندہی کی ہے جہاں اسٹیشن قائم کیے جائیں گے تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگ ہماری سائیکلوں کا استعمال کریں ۔ اس وقت ہم نے شہر بھر میں 80 اسٹیشن قائم کیے ہیں جہاں ایک شخص دوسری منزل کے لیے سواری بک کر سکتا ہے ۔ 4 مئی کو جموں و کشمیر انتظامیہ نے سمارٹ سٹی مشن کے ایک حصے کے طور پر سرینگر میں چارٹرڈ باءک سائیکلوں کو ٹرانسپورٹ کے ایک موڈ کے طور پر متعارف کرایا تاکہ آلودگی کو کم کیا جا سکے اور ٹریفک کے مسائل پر قابو پایا جا سکے ۔ اس کے بعد سے لوگوں کی اکثریت ایک جگہ سے دوسری جگہ جانے کے لیے ان سائیکل سروسز کا سہارا لے رہی ہے ۔ پروجیکٹ کے لیے، شہری حکومت نے بھوپال کی بنیاد پر ایک اسٹارٹ اپ کے ساتھ تعاون کیا ۔ گزشتہ سال نومبر میں اس سہولت کے لیے ایک ٹیسٹ رن کیا گیا تھا ۔ سروس کو استعمال کرنے کے لیے صارف کو 300 روپے جمع کر کے اپنی لاءف ٹائم سبسکرپشن کو رجسٹر اور فعال کرنا ہوگا ۔ حکام کے مطابق پہلے تیس منٹ تک یہ سواری مفت ہوگی اور اس کے بعد ایک گھنٹے تک کے لیے 5 روپے وصول کیے جائیں گے ۔ 2 سے 3 گھنٹے کے سفر کے لیے 25 روپے کی قیمت ہوگی ۔ 3، 4 اور 6 گھنٹے کی سواریوں کے لیے لوگ بالترتیب 50 روپے، 100 روپے اور 200 روپے ادا کریں گے ۔ 8 گھنٹے سے زیادہ کی سواریوں کے لیے صارفین سے 350 روپے وصول کیے جائیں گے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں