0

محکمہ پنشن اینڈ پنشنرز ویلفیئر نے یکم تا 30 نومبر 2023 تک ملک گیر ڈیجیٹل لائف سرٹیفکیٹ مہم 2.0 کا آغاز کیا

ملک گیر ڈیجیٹل لائف سرٹیفکیٹ مہم 2.0 ہندوستان کی تمام ریاستوں / مرکز کے زیر انتظام علاقوں کے 100 شہروں میں 500 مقامات پر منعقد کی جارہی ہے
ملک گیر ڈیجیٹل لائف سرٹیفکیٹ مہم 2.0 تمام اسٹیک ہولڈرز کو ایک پلیٹ فارم پر لاکر ’پوری حکومت‘ کے نقطہ نظر کی عکاسی کرتی ہے
ڈیجیٹل لائف سرٹیفکیٹ کے چہرے کی تصدیق جمع کرنے سے پنشن یافتگان کے لئے لائف سرٹیفکیٹ جمع کروانا آسان اور ہموار ہوجائے گا

سرینگر، 05 نومبر، 2023/ مرکزی حکومت کے پنشنروں کی ’زندگی میں آسانی‘ کو بڑھانے کے لئے، پنشن اور پنشنرز کی فلاح و بہبود کا محکمہ ڈیجیٹل لائف سرٹیفکیٹ (ڈی ایل سی) یعنی جیون پرمان کو بڑے پیمانے پر فروغ دے رہا ہے۔ 2014 میں، بائیو میٹرک آلات کا استعمال کرتے ہوئے ڈی ایل سی جمع کرنا شروع کیا گیا تھا۔ اس کے بعد محکمہ نے ایم ای آئی ٹی وائی اور یو آئی ڈی اے آئی کے ساتھ مل کرآدھار ڈیٹا بیس پر مبنی چہرے کی تصدیق کی ٹیکنالوجی سسٹم تیار کیا، جس کے ذریعے کسی بھی اینڈروئیڈ پر مبنی اسمارٹ فون سے ایل سی جمع کرنا ممکن ہے۔ اس سہولت کے مطابق، چہرے کی تصدیق کی تکنیک کے ذریعے کسی شخص کی شناخت قائم کی جاتی ہے اور ڈی ایل سی تیار کیا جاتا ہے۔نومبر 2021 میں لانچ کی جانے والی اس پیش رف والی ٹیکنالوجی نے بیرونی بائیو میٹرک آلات پر پنشنروں کا انحصار کم کیا اور اسمارٹ فون پر مبنی ٹیکنالوجی سے فائدہ اٹھاتے ہوئے اس عمل کو عوام کے لیے زیادہ قابل رسائی اور سستا بنا دیا۔ ڈیجیٹل لائف سرٹیفکیٹ جمع کرانے کے لئے ڈی ایل سی/ فیس تصدیقی ٹکنالوجی کے استعمال کے لئے مرکزی حکومت کے تمام پنشنروں کے ساتھ ساتھ پنشن تقسیم کرنے والے حکام کے درمیان بیداری پھیلانے کے مقصد سے، محکمہئ پی پی ڈبلیو نے نومبر 2022 کے مہینے میں ملک بھر کے 37 شہروں میں ایک ملک گیر مہم شروع کی۔ مرکزی حکومت کے پنشنروں کے 35 لاکھ سے زیادہ ڈی ایل سی جاری کرنے کے ساتھ یہ مہم ایک بڑی کامیابی تھی۔ ملک بھر کے 100 شہروں میں 500 مقامات پر یکم سے 30 نومبر، 2023 تک ایک ملک گیر مہم چلائی جا رہی ہے، جس میں 17 پنشن تقسیم کرنے والے بینکوں، وزارتوں / محکموں، پنشنرز ویلفیئر ایسوسی ایشن، یو آئی ڈی اے آئی، ایم ای آئی ٹی وائی کے تعاون سے 50 لاکھ پنشنروں کو ہدف بنایا گیا ہے۔اس بات کو یقینی بنانے کے لئے کہ لائف سرٹیفکیٹ جمع کرانے کے ڈیجیٹل طریقوں کا فائدہ ملک کے دور دراز کونوں میں پنشنروں تک پہنچے اور سپر سینئر / بیمار / معذور پنشنرز کو بھی فائدہ پہنچے، تمام اسٹیک ہولڈرز بشمول حکومت ہند کی وزارتیں / محکمے، پنشن تقسیم کرنے والے بینک اور پنشنرز ایسوسی ایشن قابل ذکر ہیں کے کردار اور ذمہ داریوں کی وضاحت کے ساتھ ایک جامع سرکیولر جاری کیا گیا ہے۔ ان رہنما خطوط میں اسٹیک ہولڈرز کی جانب سے مہم کے لیے نوڈل افسران کی نامزدگی، دفاتر اور بینک برانچوں / اے ٹی ایمز میں لگائے گئے بینرز/ پوسٹرز کے ذریعے ڈی ایل سی فیس تصدیقی تکنیک کے بارے میں آگاہی پھیلانا/ مناسب تشہیر فراہم کرنا،جہاں تک ممکن ہو ڈی ایل سی/چہرے کی تصدیق کی تکنیک کا استعمال کریں جہاں گھروں کی دہلز پر بینکنگ خدمات حاصل کی جاتی ہیں، بینک برانچوں میں وقف عملے کو اینڈرائیڈ فون سے لیس کرنا تاکہ پنشنرز لائف سرٹیفکیٹ جمع کرانے کے وقت اس ٹیکنالوجی کو استعمال کر سکیں، پنشنروں کو بغیر کسی تاخیر کے اپنا ڈی ایل سی جمع کروانے کے قابل بنانے کے لیے کیمپوں کا انعقاد اور بستر پر پڑے پنشنروں کی صورت میں گھر کا دورہ کرنا۔پنشنرز ویلفیئر ایسوسی ایشنز کو ڈی ایل سی جمع کرانے کے لئے پنشنرز کے لئے کیمپ لگانے کے لئے بھی حساس بنایا گیا ہے۔ پنشن اور پنشنرز ویلفیئر محکمہ کے حکومت ہند کے انڈر سکریٹری جناب وشال کمار 6اور 7 نومبر، 2023 کو سرینگر میں مختلف مقامات (سرینگر، بادامی باغ، جواہر نگر، کرن نگر اور بمنہ) کا دورہ کریں گے تاکہ پنشنروں کو مختلف ڈیجیٹل طریقوں کے استعمال میں مدد مل سکے۔ محکمہ پنشن اور پنشنرز ویلفیئر اس مہم کو ملک بھر میں کامیاب بنانے کے لئے ہر ممکن کوشش کرے 1029

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں