0

مراکش میں 6.8 شدت کے زلزلہ۔ 632 افراد ہلاک

مراکش ۔ 9؍ ستمبر۔ مراکش کے شہر مراکش کے جنوب مغرب میں جمعہ کو آنے والے 6.8 شدت کے زلزلے کے نتیجے میں 632 افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں، جس سے افراتفری پھیل گئی ہے کی۔سوشل میڈیا پر سامنے آنے والی متعدد ویڈیوز میں عمارتوں کو منہدم ہوتے اور ملبے کو دکھایا گیا ہے۔زلزلہ مقامی وقت کے مطابق رات 11 بجکر 11 منٹ پر ماراکیش کے جنوب مغرب میں 44 میل (71 کلومیٹر) جنوب مغرب میں 18.5 کلومیٹر کی گہرائی میں آیا۔وزارت نے ایک بیان میں کہا، “ایک عارضی رپورٹ کے مطابق، زلزلے سے صوبوں اور الحوز، مراکش، اوارزازیٹ، عزیلال، چیچاؤ اور تارودنت کے صوبوں اور میونسپلٹیوں میں 632 افراد ہلاک ہوئے۔وزارت نے ایک بیان میں مزید کہا کہ ہزاروں افراد زخمی ہوئے اور ہسپتال میں داخل ہوئے۔زلزلے کے دوران کئی عمارتیں تباہ ہوگئیں جس سے بڑے شہروں کے مکین اپنے گھروں سے باہر نکل آئے۔ مزید برآں، ایک مقامی اہلکار نے کہا کہ زیادہ تر اموات پہاڑی علاقوں میں ہوئیں جہاں تک پہنچنا مشکل تھا۔ زلزلے کے مرکز کے قریب واقع پہاڑی گاؤں آسنی کے رہائشی مونتاسر ایتری نے کہا کہ ہمارے پڑوسی ملبے تلے دبے ہوئے ہیں اور لوگ گاؤں میں دستیاب ذرائع کا استعمال کرتے ہوئے انہیں بچانے کے لیے سخت محنت کر رہے ہیں،زلزلے کے مرکز کا قریب ترین بڑا شہر ماراکیچ ہے، جہاں پرانے شہر میں متعدد عمارتیں — بشمول یونیسکو کی عالمی ثقافتی ورثہ سائٹ — منہدم ہو گئیں۔مزید برآں، عالمی انٹرنیٹ مانیٹر نیٹ بلاکس کے مطابق، علاقے میں بجلی کی کٹوتی کی وجہ سے مراکش میں انٹرنیٹ کنیکٹیویٹی میں خلل پڑا ہے۔یو ایس جیولوجیکل سروے نے کہا کہ “اس خطے کی آبادی ایسے ڈھانچے میں رہتی ہے جو زلزلے کے جھٹکوں کے لیے انتہائی خطرناک ہیں۔یو ایس جی ایس نے کہا: “زلزلے کا مرکز 18.5 کلومیٹر (11.5 میل)کی نسبتاً کم گہرائی میں تھا اور یہ مراکش سے تقریباً 72 کلومیٹر (44 میل)جنوب مغرب میں اور اٹلس ماؤنٹین قصبے اوکیمیڈن سے 56 کلومیٹر مغرب میں 11 بجے مقامی وقت کے بعد آیا۔ افریقی اور یوریشین پلیٹوں کے درمیان واقع ہونے کی وجہ سے مراکش اپنے شمالی علاقے میں اکثر زلزلے محسوس کرتا ہے۔
ایم این این

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں