0

مشرق وسطیٰ کے تنازعات سے تیل بازار متاثر ہونے کا امکان – جیفری

واشنگٹن، 24 اکتوبر (یو این آئی) عالمی شہرت یافتہ ماہر اقتصادیات اور اقوام متحدہ کے پائیدار ترقی کے حل کے نیٹ ورک کے چیئرمین جیفری ڈی سیچس نے کہا کہ اسرائیل اور حماس جنگ سے پیدا ہونے والا مشرق وسطیٰ میں وسیع تر تنازعہ تیل بازار وں کو متاثر اور عالمی معیشت کو غیر مستحکم کرے گا۔

مسٹر سیچس نے کہا ’’اگر مشرق وسطیٰ میں وسیع پیمانے پر جنگ ہوئی تو تیل بازار کے متاثر ہونے کا امکان ہے۔‘‘ یہ یقینی طور پر عالمی معیشت کو مزید غیر مستحکم کرے گا۔ انہیں خدشہ ہے کہ غزہ پر اسرائیل کا زمینی حملہ ایک وسیع جنگ کا باعث بن سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مجھے یقین نہیں ہے کہ اگر اسرائیل غزہ میں بڑے پیمانے پر قتل عام کر رہا ہے، خاص طور پر زمینی حملے میں، تو مسلم دنیا اسے خاموشی اور غیر فعالی سے دیکھے گی۔

امریکہ مبینہ طور پر حماس کے ہاتھوں یرغمالیوں کی رہائی کے لیے مذاکرات کے لیے اسرائیل سے اپنے زمینی حملوں میں تاخیر کرنے کی اپیل کررہا ہے۔ اس کے علاوہ صدر جو بائیڈن نے بعد کے تبصروں میں کہا کہ اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ بندی کے بارے میں کوئی بھی بات چیت تبھی ممکن ہو گی جب تمام یرغمالیوں کو رہا کر دیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ مسلم دنیا کو فوری طور پر اسرائیل- فلسطین بحران کے سیاسی حل کی اپیل کرنا چاہیے، جس کا مطلب ہے کہ حماس کو غیر مسلح کرنا اور اقوام متحدہ کے امن دستوں کو شروعات سمیت تنازعہ کو غیر فوجی بنانے کے منصوبے کے ساتھ فلسطینی ریاست کا قیام کرنا۔
مسٹر سیچس کے مطابق، حماس کے 7 اکتوبر کو اسرائیل کے خلاف حملے کرنے کے پیچھے کئی مقاصد ہوسکتے ہیں، جن میں اسرائیل-سعودی کے درمیان معمول پر لانے کے مذاکرات کو متاثر کرنا بھی شامل ہے۔
امریکی حکام نے عندیہ دیا ہے کہ سعودی- اسرائیل مذاکرات کو منسوخ نہیں کیے گئے ہیں لیکن اسرائیل اور حماس کے بحران کے درمیان مبینہ طور پر بات چیت روک دی گئی ہے۔

واضح رہے کہ حماس نے 7 اکتوبر کو غزہ پٹی سے اسرائیل کے خلاف زبردست راکٹ حملہ کیا تھا۔ اسرائیل نے جوابی حملے شروع کیے اور غزہ کی پٹی کی مکمل ناکہ بندی کا حکم دیا، جس میں 20 لاکھ سے زائد افراد آباد ہیں، اور پانی، خوراک اور ایندھن کی سپلائی منقطع کر دی گئی۔ بعد ازاں ناکہ بندی میں نرمی کر دی گئی تاکہ انسانی امدادی ٹرکوں کو غزہ پٹی میں داخل ہونے کی اجازت دی جا سکے۔ جب تنازعہ بڑھتا گیا تو دونوں فریقوں کے ہزاروں افراد ہلاک اور زخمی ہوئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں