0

منشیات اور ملٹنسی سے نمٹنے کےلئے اب تربیت یافتہ کتوں کی خدمات حاصل کی جارہی ہے

بھارتی نشل کے کتے جلد ہی پولیس ڈیوٹیوں میں تعینات کیے جائیں گے ۔ وزارت داخلہ

سرینگر;23اکتوبر;ایس این این ;سنٹرل آرمڈ پولیس فورس (سی اے پی ایف) جیسے بی ایس ایف، سی آر پی ایف اور سی آئی ایس ایف پولیس ڈیوٹی کے لیے ہندوستانی کتوں کی نسلوں کو بھرتی کرنے کے لیے تیار کیا ہیں ۔ سٹار نیوز نیٹ ورک کے مطابق ہندوستانی کتے کی نسل رام پور ہاوَنڈ، ہمالیائی پہاڑی کینین ہماچلی چرواہا، گڈی اور بکھروال اور تبتی مستوف جلد ہی پولیس کے فراءض جیسے مشتبہ افراد کو سونگھنے، منشیات اور دھماکہ خیز مواد کو سونگھنے کے علاوہ خطرے سے دوچار علاقوں میں گشت کرنے کےلئے تعینات کئے جارہے ہیں ذراءع کے مطابق سنٹرل آرمڈ پولیس فورس (سی اے پی ایف) جیسے بی ایس ایف، سی آر پی ایف اور سی آئی ایس ایف پولیس ڈیوٹی کے لیے ہندوستانی کتوں کی نسلوں کو بھرتی کرنے کے لیے تیار کیا ہیں ہندوستانی کتے کی نسل کے مدھول ہاوَنڈ کا ٹرائل ایس ایس بی اور آئی ٹی بی پی نے پہلے ہی مکمل کیا ہے ۔ وزارت داخلہ کے ایک اہلکار نے بتایاکہ کچھ دیگر ہندوستانی کتوں کی نسلوں جیسے رام پور شکاری کی آزمائشیں بھی سی آر پی ایف اور بی ایس ایف کے کینائن ٹریننگ مراکز میں چل رہی ہیں ،‘‘اس کے علاوہ، وزارت نے ہمالیہ کے پہاڑی کتوں جیسے ہماچلی چرواہا، گڈی، بکھروال اور تبتی ماسٹف کے ساتھ ساتھ بارڈر سیکورٹی فورس (بی ایس ایف)، انڈو تبتی بارڈر پولیس (آئی ٹی بی پی) اور ساشسٹرا سیما بال (ایس ایس بی) کے ذریعے ٹرائل کرنے کا بھی حکم دیا ہے ۔ ابھی مقدمے چل رہے ہیں ۔ وزیر اعظم نریندر مودی ماضی میں سائنسی طریقوں سے مقامی کتوں کی نسلوں کو فروغ دینے کی بات کر چکے ہیں ۔ سی اے پی ایف کے ذریعہ رکھے گئے تمام کتے پولیس سروس آئی ٹی بی پی)) اسکواڈز کا حصہ ہیں ۔ سی اے پی ایف جو پولیس ڈیوٹی کے لیے کتوں کی خدمات حاصل کرتے ہیں اور انہیں تربیت دیتے ہیں وہ ہیں بی ایس ایف، سی آر پی ایف، سی آئی ایس ایف، آئی ٹی بی پی، ایس ایس بی، این ایس جی اور آسام راءفلزپہلے ہی ان کتوں کو سنبھال رہی ہے اور ان کی خدمات حاصل کررہی ہیں ۔ کتوں کو دھماکا خیز مواد جیسے آئی ای ڈیز اور بارودی سرنگوں کا پتہ لگانے، منشیات اور جعلی کرنسیوں کے علاوہ گشت اور دیگر کاموں کے لیے تربیت دی جاتی ہے ۔ اہلکار نے کہا کہ دہشت گردوں کو تلاش کرنے کے لیے کبھی کبھار کتے بھی استعمال کیے جاتے ہیں ۔ آئی ٹی بی پی) تقریباً 4,000 کتوں کے ساتھ، ملک میں سب سے زیادہ پولیس کتے استعمال کرنے والے ہیں ۔ ;آئی ٹی بی پی) کے ذریعہ ہر سال تقریباً 300 پپلوں کی خدمات حاصل کی جاتی ہیں ۔ ;آئی ٹی بی پی) میں ، کتوں کی سب سے زیادہ تعداد سنٹرل ریزرو پولیس فورس (تقریباً 1,500) کے پاس ہے، اس کے بعد سنٹرل انڈسٹریل سیکورٹی فورس (تقریباً 700) ہے ۔ ایک اور اہلکار نے بتایا کہ انسداد دہشت گردی کی تنظیم نیشنل سیکیورٹی گارڈ (این ایس جی) کے پاس تقریباً 100 کتے ہیں ۔ ;75;9 اسکواڈ کو وزارت داخلہ نے 2019 میں پولیس کی جدید کاری کے پروگرام کے ایک حصے کے طور پر قائم کیا تھا جس کا مقصد کتوں کی افزائش، تربیت اور انتخاب کو ہموار کرنا تھا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں