0

نوجوان وکیل بابر قادری کے قتل کیس کا نیا موڈ

سابق صدرJKHCBA ایڈووکیٹ میاں قیوم گرفتار
سری نگر:۵۲، جون:جے کے این ایس : جموں و کشمیر ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے سابق صدر ایڈووکیٹ میاں قیوم کو 2020 کے نوجوان کشمیری وکیل بابر قادری کے قتل کے سلسلے میں گرفتار کر لیا گیا ہے۔30 سال کی عمر میں ایڈووکیٹ بابر قادری ولد محمد یاسین قادری ساکنہ زاہد پورہ، حول، سری نگر کو 24ستمبر 2020 میں 2افراد نے گولی مار کر ہلاک کر دیا تھا جو ان کے سری نگر کے گھر میں گاہک کے طور پر آئے تھے۔جے کے این ایس کے مطابق جموں و کشمیر پولیس کی طرف سے قائم کردہ ایک خصوصی ٹیم نے اگست2021 میں5مشتبہ افراد کے خلاف الزامات درج کئے تھے۔کشمیر پولیس نے کہا تھا کہ ثاقب منظور نامی ملزم بابرقادری کے قتل میں بھی ملوث تھا۔ثاقب منظور، لشکر طیبہ کے شیڈو فرنٹ، مزاحمتی محاذ (TRF) کے چیف کمانڈر عباس شیخ کا نائب تھا۔ دونوں کو2021 میں سیکورٹی فورسز نے گولی مار کر ہلاک کر دیا تھا۔2022 میں، جموں و کشمیر پولیس نے بابر قادری کے قتل کے سلسلے میں میاں قیوم سمیت 3 وکلاءکی رہائش گاہوں پر چھاپے مارے تھے۔ستمبر 2023 میں، ریاستی تحقیقاتی ایجنسی (SIA) نے جے اینڈ کے ہائی کورٹ کے نوجوان وکیل بابر قادری کے قتل میں ملوث افراد کی گرفتاری کےلئے معلومات فراہم کرنے والوں کے لیے 10 لاکھ روپے کے نقد انعام کا اعلان کیا تھا۔چیف انوسٹی گیشن آفیسر SIT، SIA کی طرف سے جاری کردہ نوٹس میں کہاگیاہے کہ ایڈووکیٹ بابرقادر ی کے قتل کے سلسلے میں پولیس تھانہ لال بازار سری نگرمیں ایک مقدمہ زیر ایف آئی آر نمبر 62/2020زیر سیکشن302آئی پی سی ،7/27انڈین آرمز ایکٹ اوریواے پی اے کی دفعات16،18،20اور39کے تحت درج کیاگیا تھا ،اور اب یہ کیس SIAکشمیرکے پاس ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں