0

پاکستان سے لگنے والی سرحدوں کے 5کلو میٹر کے حدود میں دفعہ 144کے تحت پٹاخے سرکنے پر پابندی عائد کی گئی، حکمنامہ فوری نافذ

سرینگر/30 اکتوبر/وی او آئی//سرحد سے 5 کلومیٹر کے دائرے میں پٹاخوں کی فروخت اور استعمال پر پابندی، یہ فیصلہ سرحد پار فائرنگ کے پیش نظر کیا گیا۔یہ حکم فوری طور پر نافذ العمل ہے اور اگلے احکامات تک جاری رہے گا۔ دفعہ 144 کے تحت پٹاخوں کی فروخت اور استعمال پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ اگر کوئی خلاف ورزی کرتا پایا گیا تو اس کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔وائس آف انڈیا کے مطابق سرحد سے 5 کلومیٹر کے دائرے میں پٹاخوں کی فروخت اور استعمال پر پابندی۔سرحد پار فائرنگ کے پیش نظر جموں میں بین الاقوامی سرحد اور ایل او سی سے پانچ کلومیٹر کے دائرے میں پٹاخوں کی فروخت اور استعمال پر پابندی لگا دی گئی ہے۔ یہ حکم فوری طور پر نافذ العمل ہے اور اگلے احکامات تک جاری رہے گا۔اے ڈی سی ہرویندر سنگھ کی طرف سے جاری حکم میں کہا گیا ہے کہ اکثر دیکھا گیا ہے کہ شادیوں کے سیزن میں بڑے پیمانے پر آتش بازی کی جاتی ہے۔ بین الاقوامی سرحد کے قریب آتش بازی بعض اوقات سیکورٹی فورسز کے درمیان الجھن پیدا کرتی ہے۔سرحد پار فائرنگ کے خدشے کے پیش نظر مقامی دیہاتیوں میں خوف و ہراس کی صورتحال پیدا ہو گئی ہے۔ جس کی وجہ سے اگر اسے نہ روکا گیا تو عوام میں خوف کی فضا پیدا ہو جائے گی۔ اس کے علاوہ سیکورٹی کی صورتحال بھی پیدا ہو جائے گی۔ اس کے پیش نظر دفعہ 144 کے تحت پٹاخوں کی فروخت اور استعمال پر پابندی لگا دی گئی ہے۔ اگر کوئی خلاف ورزی کرتا پایا گیا تو اس کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔جان لیں کہ دیوالی قریب ہے۔ شادیوں کا موسم بھی ہے۔ ایسے میں انتظامیہ نے یہ فیصلہ سرحدی علاقوں میں پٹاخوں کے استعمال سے پیدا ہونے والی الجھن سے نمٹنے کے لیے لیا ہے۔ پاکستان کی جانب سے 17 اور 26 اکتوبر کو گولہ باری ہوئی ہے۔ گزشتہ جمعرات کو جیسے ہی گولہ باری شروع ہوئی، لوگ شادی کی بارات چھوڑ کر اپنے گھروں کو لوٹنے پر مجبور ہوگئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں