0

پاکستان کے ساتھ لگنے والی سرحدوں پر فوج الرٹ

سری نگر،22اکتوبر(یو این آئی) جموں وکشمیر میں پاکستان کے ساتھ لگنے والی سرحدوں پر سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی اور دراندازی کے تازہ واقعات رونما ہونے کے بعد حد متارکہ پر فوج کی چوکسی بڑھائی گئی ہے تاکہ ملک دشمن عناصر کے منصوبوں کو ناکام بنایا جاسکے۔
اطلاعات کے مطابق پچھلے ایک ہفتے کے دوران بین الاقوامی سرحد اور ایل او سی پر دراندازی اور سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی کے واقعات رونما ہونے کے بعد فوج کو الرٹ پر رہنے کے احکامات صادر کئے گئے ہیں۔
ذرائع نے بتایا کہ سرحد پر مشکوک سرگرمیوں پر کڑی نظر گزر رکھی جارہی ہے اور ملک دشمن عناصر کی طرف سے کسی بھی ناموافق کوشش کو ناکام بنانے کے لئے فوج، سی آر پی ایف اور پولیس کے ساتھ مشترکہ گشت بھی جاری ہے۔
دفاعی ذرائع نے بتایاکہ لائن آف کنٹرول میں اگلی چوکی پر تعینات فوجی اہلکار دن رات نظر گزر رکھے ہوئے ہیں تاکہ سرحد پار سے کوئی بھی ایل او سی کو پار نہ کر سکے۔
انہوں نے بتایا کہ ہم انتہائی مستعد ہیں کیونکہ ملی ٹینٹوں نے دراندازی کرکے کشمیر میں داخل ہونے کے ارادارے ترک نہیں کئے ہیں۔
انہوں نے مزید بتایا کہ وادی میں قیام امن کو یقینی بنانے کے لئے کشمیر کے350 کلومیٹر سرحد پر چوکسی بڑھائی گئی ہیں۔
دفاعی ذرائع نے مزید بتایاکہ سرحدوں پر تعینات افواج کو چوبیس گھنٹے متحرک رہنے کے احکامات صادر کئے گئے ہیں تاکہ ملک دشمن عناصر کے منصوبوں کو خاک میں ملایا جاسکے۔
ان کے مطابق سرحدوں پر تعینات افواج دن رات اپے فرائض خوش اسلوبی کے ساتھ انجام دے رہے ہیں۔
بتادیں کہ پچھلے ایک ہفتے کے دوران ارینا اور کیرن سیکٹر میں سنائپر حملے میں تین اہلکار زخمی ہوئے جبکہ اتوار کے روز اوڑی میں دراندازی کی ایک کوشش کو فوج نے ناکام بنایا ۔
یو این آئی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں