0

پولیس کا قریبی ظاہر کرنے والی کولگام کی شاطرخاتون شوپیان پولیس نے معاون سمیت کیا گرفتار

تقریباًساڑھے8لاکھ وصول،اڈھائی لاکھ بر آمد :پولیس
شوپیان:۹۱، ستمبر: جے کے این ایس : جنوبی کشمیر کے شوپیاں ضلع میں پولیس نے منگل کو ایک خاتون کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے جو پولیس کا قریبی ساتھی ظاہر کر کے لوگوں سے پیسے بٹورتی ہے۔جے کے این ایس کے مطابق ایک بیان میں پولیس نے کہا کہ شوپیاں پولیس نے مربوط اور موثر انداز میں ایک شاطر خاتون محبوبہ اختر زوجہ شفقت محی الدین کوچھے ساکنہ کاردار کولگام کو گرفتار کیا ہے، جو ایک ٹاو ¿ٹ یعنی دلال کے طور پر کام کر رہی تھی اور شوپیاں میں مقامی لوگوں سے پیسے بٹور رہی تھی۔بیان کے مطابق یہ خاتون شوپیاں میں پولیس کے قریب ہونے کا ڈرامہ کررہی تھی اور ان افراد کو، جنہیں پولیس نے احتیاطی حراست میں پوچھ گچھ کےلئے لایا ہے، چھوڑنے کے بدلے اس نے شوپیاں کے چند خاندانوں سے بھاری رقم بٹوری۔پولیس کے مطابق اس دھوکہ دہی میں اس کی مدد غلام حسین شاہ ولد محمد شعبان شاہ ساکنہ بیہی باغ، کولگام نے کی۔ اس سلسلے میں ایف آئی آر نمبر 158/2023 قانون کی متعلقہ دفعات کے تحت پولیس اسٹیشن شوپیاں میں درج کرکے تفتیش شروع کردی گئی ہے۔ موصول ہونے والی معلومات کی بنیاد پر دونوں بھتہ خوروں کو پوچھ گچھ کے لیے تھانے بلایا گیا۔پولیس ترجمان نے مزید بتایا کہ ملزمان نے تمام گٹھ جوڑ اور طریقہ کار کا انکشاف کیا کہ وہ لوگوں سے بھتہ وصول کرتے ہیں۔ شریک ملزم غلام حسین شاہ نے مزید انکشاف کیا کہ زیر بحث خاتون نے وقفے وقفے سے ان خاندانوں سے 8.4 لاکھ روپے بھتہ وصول کیا ہے۔ پولیس اس کے قبضے سے اڈھائی لاکھ روپے برآمد کرنے میں کامیاب رہی۔پولیس نے کہاکہ ملزمان سے مزید برآمدگی کی توقع ہے۔ایس ایس پی شوپیاں تنوشری نے کہا ہے کہ بھتہ خوری بلیک میلنگ کی ایک شکل ہے اور عوام پر واضح کر دیا ہے کہ وہ ایسے کسی بلیک میلر کا شکار نہ ہوں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں