0

کشتواڑ میں پاکستان میں مقیم 13 دہشت گردوں کی جائیدادوں کی قرق کی کارروائی شروع

کشتواڑ۔ 16؍ ستمبر۔ ایم این این۔ عدالت نے جموں اور کشمیر کے کشتواڑ ضلع میں پاکستان میں مقیم 13 دہشت گردوں کو اشتہاری مجرم قرار دیا ہے اور اگر وہ 30 دنوں کے اندر اس کے سامنے پیش نہیں ہوتے ہیں تو ان کی جائیدادوں کو ضبط کرنے کی راہ ہموار ہو جائے گی۔ حکام نے ہفتہ کو یہ اطلاع دی۔انہوں نے مزید کہا کہ کوڈ آف کرمنل پروسیجر (سی آر پی سی) کی دفعہ 82 کے تحت اعلانیہ نوٹس مقامی پولیس کے خصوصی تحقیقاتی یونٹس کے ذریعہ کشتواڑ کے مختلف حصوں میں دہشت گردوں کے اہل خانہ کو ڈھول کی تھاپ کے درمیان پیش کیا گیا۔سینئر سپرنٹنڈنٹ آف پولیس (ایس ایس پی)، کشتواڑ، خلیل پوسوال نے کہا کہ کل 13 مقامی دہشت گرد، جو سرحد پار سے کام کر رہے ہیں اور ضلع میں دہشت گردی کو بحال کرنے کی بار بار کوششیں کر رہے ہیں، کو اشتہاری مجرم قرار دیا گیا جب وہ جواب دینے میں ناکام رہے۔ انہیں غیر ضمانتی وارنٹ پہلے جاری کیے گئے۔یہ وارنٹ این آئی اے کی خصوصی عدالت نے مارچ میں کشتواڑ پولیس اسٹیشن میں انڈین پینل کوڈ اور غیر قانونی سرگرمیاں (روک تھام) ایکٹ کی مختلف دفعات کے تحت درج دہشت گردی سے متعلق کیس میں جاری کیے تھے۔ایس ایس پی نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ ”اگر یہ اشتہاری مجرم 30 دنوں کے اندر ہتھیار ڈالنے میں ناکام رہتے ہیں تو سی آر پی سی کی دفعہ 83 کے تحت ان کی جائیدادوں کو ضبط کرنے کی کارروائی شروع کی جائے گی۔’ ‘مفرور دہشت گردوں کو ان کی جائے پیدائش پر بھیجے گئے اعلانیہ نوٹس میں، ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج (فاسٹ ٹریک کورٹ) ڈوڈا سدیش شرما نے کہا کہ ایڈیشنل سیشن جج، جموں کی عدالت کی طرف سے جاری کردہ گرفتاری کے وارنٹ اس رپورٹ کے ساتھ واپس کیے گئے کہ ملزم نہیں مل سکا،میرے اطمینان سے یہ ظاہر ہوا ہے کہ مذکورہ ملزم مفرور ہے یا مذکورہ وارنٹ کی خدمت سے بچنے کے لیے اپنے آپ کو چھپا رہا ہے۔ اس کے ذریعہ اعلان کیا جاتا ہے کہ ملزم کو اعلان کی اشاعت کی تاریخ سے 30 دن کے اندر اس عدالت میں حاضر ہونا ضروری ہے، ایسا نہ کرنے کی صورت میں اس کے خلاف سیکشن 83، سی آر پی سی کے تحت کارروائی شروع کی جائے گی۔عہدیداروں نے بتایا کہ دیگر کے علاوہ ہلر کے شاہنواز کانٹھ عرف ’’عمر‘‘، جامع مسجد کشتواڑ کے نعیم احمد عرف ’’امیر‘‘، کچلو کے قریب ایک جگہ سے محمد اقبال عرف ’’بلال‘‘ مارکیٹ، چیرول کا شاہنواز عرف ”نعیم” اور کنڈلی پوچل کے جاوید حسین گری عرف ”مزمل’ ‘ کے خلاف اعلان جاری کیا گیا تھا۔ اس فہرست میں جگنا کیشوان کے بشیر احمد مغل، غازی الدین اور ستار دین عرف سیف اللہ، بندرنا کے امتیاز احمد عرف داؤد، کیتھر بونجواہ کے شبیر احمد، پٹنازی بونجواہ کے محمد رفیق کین بھی شامل ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں