0

گاندربل پولیس نے چوروں کے گروہ کا پردہ فاش کیا، پانچ سارق گرفتار

سری نگر،16جون: جموں وکشمیر کے وسطی ضلع گاندربل میں پولیس نے چوروں کے ایک نیٹ ورک کا پردہ فاش کرکے لاکھوں روپیہ مالیت کی چرائی گئی اشیاءکو برآمد کرکے ضبط کیا ہے۔
پولیس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ 18اپریل 2024کو پولیس اسٹیشن لار میں فرہاد یوسف ولد سید یوسف ساکن یار مقام نے پولیس اسٹیشن میں تحریری طورپر شکایت درج کی کہ درمیانی شب نامعلوم افراد اس کے رہائشی مکان میں گھس آئے اور وہاں سے طلائی زیورات اور نقدی اڑا کر فرار ہونے میں کامیاب ہوئے۔
پولیس نے معاملے کی نسبت ایف آئی آر زیر نمبر 16کے تحت کیس درج کرکے تحقیقات شروع کی۔
پولیس بیان کے مطابق ڈی ایس پی ہیڈ کواٹر گاندربل کی سربراہی میں ایک کمیٹی تشکیل ڈی جنہوں نے ٹیکنیکی صلاحیتوں کو بروئے کا لا کر چند مشتبہ افراد کو پوچھ تاچھ کی خاطر پولیس اسٹیشن لار طلب کیا۔
انہوں نے بتایا کہ دوران پوچھ گچھ دو مشتبہ افراد جن کی شناخت طاریق احمد راتھر ولد غلام محمد راتھر ساکن خانقاہ معلی پتی ٹاکنواری اور منظور احمد چوپان ولد غلام محمد چوپان ساکن لارسن گاندربل کے بطور ہوئی ہے نے اپنا جرم قبول کیا۔
موصوف ترجمان کے مطابق گرفتار شدگان نے تفتیش کے دوران انکشاف کیا کہ چوری کے اس معاملے میں ان کے مزید تین ساتھی ملوث ہیں جو کرگل فرار ہوئے ہیں ۔
پولیس نے ایک ٹیم تشکیل دی اور فوری طورپر کرگل روانہ کیا جہاں سے مزید تین افراد جن کی شناخت شیراز احمد گورو عرف شیروولد شفیع گورو ساکن گاد ہانجی مولہ گنڈ روشان ، شوکت احمد ساد عرف ویرو ولد گل ساد ساکن نارئن باغ شادی پورہ کے بطور ہوئی کی گرفتاری عمل میں لائی گئی ۔ اور ایک کمسن کو بھی دھر دبوچا گیا ہے۔
گرفتار شدگان کے قبضے سے دس ہزار اور چرائے گئے طلائی زیورات برآمد کرکے ضبط کئے گئے ہیں۔
پولیس کا کہنا ہے کہ اس سلسلے میں تحقیقات جاری ہے اور مزید گرفتاریوں کو خارج از امکان قرار نہیں دیا جاسکتا ۔
یو این آئی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں