0

گڈول کوکرناگ انکاونٹرکا تیسرا دن

سری نگر:۵۱، ستمبر: جے کے این ایس : جنوبی کشمیر کے اننت ناگ ضلع کے ایک پہاڑی علاقے میں جنگلاتی علاقے میں موجود دہشت گردوں کے مقام کی نشاندہی کرنے کےلئے ڈرونز کو استعمال کیا گیا ہے جبکہ جنگل میں مشتبہ مقامات پرفوج کی جانب سے مارٹر شلنگ بھی کی جارہی ہے۔ جے کے این ایس کے مطابق حکام نے جمعہ کے روز بتایا کہ دہشت گردوں کو ختم کرنے کی کارروائی تیسرے مرحلے میں داخل ہو گئی ہے،چنار کور کے جنرل آفیسر کمانڈنگ (GOC)لیفٹیننٹ جنرل راجیو گھئی اور وکٹر فورس کے جی او سی میجر جنرل بلبیر سنگھ فیصلہ کن آپریشن کی قریب سے نگرانی کر رہے ہیں۔ فوج کے کمانڈروں نے اس عزم کااظہارکیاہے کہ دہشت گردوں کو بخشا نہیں جائے گا۔جے کے این ایس کے مطابق یہ انسداد دہشت گردی آپریشن فوج اور جموں و کشمیر پولیس کے ذریعے کیا جا رہا ہے۔ اس آپریشن میں دہشت گردوں کو قابو کرنے کےلئے نئی نسل کا اسلحہ اور ٹیکنالوجی استعمال کی جا رہی ہے۔ 60 گھنٹے سے زائد جاری رہنے والے اس آپریشن میں حملہ کرنے کی صلاحیت رکھنے والے ڈرونز کا بھی استعمال کیا جا رہا ہے۔12اور13 ستمبر کی رات کو فوج اور جموں و کشمیر پولیس نے مشترکہ تلاشی آپریشن شروع کیا۔ حکام نے بتایا کہ اننت ناگ کے گڈول کوکرناگ نامی ایک پہاڑی گاو ¿ں2سے 3 دہشت گردوں کی تلاش میں تلاشی مہم چلائی گئی ہے۔ سرچ آپریشن کے دوران فورسز کو معلوم ہوا کہ دہشت گرد گھنے جنگلاتی علاقے میں گاو ¿ں کے اونچے علاقوں میں چھپے ہوئے ہیں۔حکام نے کہاکہ فورسز نے ڈرون نگرانی کی بنیاد پر اس جنگلی علاقے پر مارٹر گولے فائر کئے جہاں انہیں یقین ہے کہ دہشت گرد چھپے ہوئے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ سیکورٹی فورسز نے علاقے میں سخت محاصرہ کر رکھا ہے۔بدھ کی صبح گڈول کوکرناگ میں ہوئی تصادم آرائی کے دوران فوج اورپولیس کے 3سینئرافسران سمیت کچھ اہلکاربھی زخمی ہوئے تھے ،تاہم فوج کی19 راشٹریہ رائفلز یونٹ کے کمانڈنگ آفیسر کرنل منپریت سنگھ، کمپنی کمانڈرمیجر آشیش دھونچک اور جموں و کشمیر پولیس کے ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ ہمایوں بٹ زخموںکی تاب نہ لاکر دم توڑ بیٹھے تھے جبکہ جمعہ کو ایک اور فوجی زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا، جس سے بدھ سے اب تک مرنے والوں کی تعداد4 ہو گئی ہے۔ دفاعی ذرائع نے بتایا کہ علاقے کو گھیرے میں لے لیا گیا ہے اور تلاشی مہم جاری ہے۔پولیس نے ایک پوسٹ میں کہاکہ ہماری افواج غیر متزلزل عزم کے ساتھ ڈٹی ہوئی ہیں،اور تین افسروں اورایک جوان کی ہلاکت میں ملوث مقامی دہشت گرد عزیر خان سمیت ایل ای ٹی کے2 دہشت گردوں کو گھیرے میں لے لیاگیاہے اور بہت جلد اُن کو کیفرکردارتک پہنچایاجائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں