0

گڈول کوکرناگ انکاﺅنٹرکاچھٹادن جنگلات میں چھپے کی تلاش جاری،سیکورٹی فورسز نے کیا5 ٹھکانوں کو تباہ

دہشت گردوں کی نقل وحمل پرڈرون اورہیلی کاپٹروں کے ذریعے کڑی نظر
اننت ناگ :۸۱، ستمبر: جے کے این ایس : جنوبی کشمیر کے اننت ناگ ضلع کے گڈول کوکرناگ کے جنگلات میں چھپے 2سے3ملی ٹنٹوں کی تلاش پیرکوچھٹے دن بھی جاری رہی۔حکام نے بتایاکہ سیکورٹی فورسز نے اب تک دہشت گردوں کے پانچ ٹھکانوں کو تباہ کیا ہے۔ غار نما ٹھکانے سے ایک جلی ہوئی لاش برآمد ہوئی ہے۔ تاہم شناخت ممکن نہیں ہو سکی۔نعش کوڈی این اے ٹیسٹ کیلئے بھیجاگیاہے کیونکہ خیال کیا جا رہا ہے کہ یہ کسی دہشت گرد کی لاش ہو گی، جو فوج کی طرف سے فائر کیے گئے مارٹر سے لگنے والی آگ میں جل گئی ہو گی۔جے کے این ایس کے مطابق حکام کاکہناہے کہ سیکورٹی فورسز نے اب آپریشن کا دائرہ ہمسایہ دیہات تک بڑھا دیا ہے۔ شناخت شدہ اہداف پر مارٹر گولے برسائے جا رہے ہیں۔ انہوںننے کہاکہ سیکورٹی فورسز کی جارحانہ حکمت عملی کے بعد دہشت گرد، جو پہاڑوں کے ہر کونے اور کونے سے واقف ہیں، مسلسل اپنے ٹھکانے بدل رہے ہیں۔ حکام نے بتایا کہ گھنے جنگل میں چھپے دہشت گردوں کی نقل وحمل کی نگرانی کے لئے سیکورٹی فورسز ڈرون اور ہیلی کاپٹروں کا استعمال کر رہی ہیں۔ خیال کیا جاتا ہے کہ بدھ سے دہشت گرد اسی گھنے جنگل میں پناہ لئے ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اتوارکو بھی سیکورٹی فورسز نے جنگل کی طرف کئی مارٹر گولے داغے،اور رات دیر گئے یہ آپریشن روکاگیاتھا تاہم پیرکی صبح پھر سے تلاشی آپریشن شروع کیاگیا لیکن آج کوئی تازہ گولہ باری ہونے کی کوئی اطلاع نہیں ہے۔ دہشت گردوں نے گھنے جنگل میں قدرتی غاروں میں ٹھکانے بنا رکھے ہیں۔ احتیاطی اقدام کے طور پر، پڑوسی پوش کریری علاقے میں سیکورٹی کو بڑھا دیا گیا ہے تاکہ یہ یقینی بنایا جا سکے کہ دہشت گرد شہری بستیوں میں داخل نہ ہوں۔ پولیس کا خیال ہے کہ2سے3 دہشت گرد جنگل کے علاقے میں پھنسے ہوئے ہیں کیونکہ فورسز نے گھیرا تنگ کر رکھا ہے۔سیکورٹی فورسز علاقے میں مسلسل محاصرے میں ہیں۔ پہاڑکی طرف جانے والی تقریباً تمام سڑکیں جہاں ممکنہ ٹھکانے کا شبہ ہے سیل کر دیا گیا ہے۔عام لوگوں بشمول زائرین کو پوچھ گچھ کے بعد ہی جانے دیا جا رہا ہے۔یادرہے گزشتہ بدھ کوہونے والی ایک خونین جھڑپ میں فوج کے2اورجموں وکشمیرکے ایک سینئرافسر سمیت 4سیکورٹی فورسزاہلکار گولیاں لگنے سے اپنی جانوں سے ہاتھ دھوبیٹھے تھے اور دیگر2فوجی اہلکار زخمی ہوگئے تھے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں