0

ہل ڈیولپمنٹ کونسل کے الیکشن کے بعدلداخ مشترکہ فورم کو ہائی پاور کمیٹی نے مدعوکیا آسمان سے تارے توڑکرنہیں لاسکتے مرکز نے ایجنڈے پرچٹان کی طرح قائم/ مشترکہ فورم

سرینگر/30/اکتوبر/اے پی آئی مرکزی زیر انتظام علاقے لداخ میں ہل ڈیولپمنٹ کونسل کے الیکشن کے بعد وزارت داخلہ کی ہائی پاور والی کمیٹی نے کرگل ڈیموکریٹک الائنس اورلہہ اکنامک الائنس کوبات چیت کے لئے مدعوکرنے کافیصلہ کیاہے۔مشترکہ پلیٹ فارم کے 14لیڈران کو بات چیت کے لئے بلایاجائیگا۔لداخ کے ایل جی او رممبرپارلیمنٹ بھی ا س بات چیت کاحصہ بنے گے۔کرگل ڈیموکریٹک پارٹی کے ایک سینئر لیڈر نے اس بات کی تصدیق کی مشترکہ فورم اپنے ایجنڈے پرچٹان کی طرح ڈھٹے ہوئے ہیں۔ اے پی آ ئی نیوز کے مطابق مرکزی زیر انتظام علاقے لداخ میں اگر چہ سردی عروج پرہے تاہم سیاسی ہلچل میں بے تحاشہ اضافہ ہے ہل ڈیولپمنٹ کونسل کے الیکشن جس میں نیشنل کانفرنس اور کانگریس کوواضح اکثریت حاصل ہوئی اور بی جے پی کو ناکامی کاسامناکرنا پڑا کے بعد اب مرکزی وزارت داخلہ کی ہائی پاور والی کمیٹی نے لداخ مشترکہ فورم کے 14ممبران کو نومبر کے پہلے ہفتے میں مدعو کرنے کا کافیصلہ کیاہے۔ نئی دہلی کے زررائع نے اس بات کی تصدیق کی لداخ مشترکہ فورم کے ساتھ بامعنیٰ بامقصد اور مثبت بات چیت کی جائے گی تاکہ مسائل کوپرُ امن طریقے سے حل کیاجاسکے۔ مرکزی سرکار کے دائرے اختیار میں جوکچھ ہوگا اسے زمینی سطح پرعملانے کی بھر پورکوشش کی جائے گی تاہم قانون کے دائرے میں رہ کر اقدامات اٹھائے جائینگے۔ آسمان سے تارے توڑ کر لائے نہیں جاسکتے ہے۔مرکزی وزرت داخلہ کے مطابق لداخ میں عام شہریوں کوجن مشکلات کاسامناہو گاان کاازالہ کرناسرکارکی ذمہ داری رہے گی۔ادھرمشترکہ فورم کے ایک سینئر لیڈرا ن نے اپنانام مخفی رکھنے کی شرط پرخبررساں ادارے کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہاکہ وزارت داخلہ کی جانب سے بات چیت لے لئے مدعو کرنا ایک خوش آئینداقدام ہے تاہم شترکہ فورم کی جانب سے جو نقاط ابھارے گئے ہیں بات چیت ان ہی پرہوگی مزکورہ لیڈر نے کہاہمارا مطلع ہے کہ پارلیمنٹ ممبران ایک سے دو کئے جائے لداخ میں اسمبلی کاقیام عمل میں لایاجائے۔لداخ کوچھٹے شڈول درجے میں لایاجائے۔ سرکاری نوکریاں مقامی لوگوں کوفراہم کی جائے او رلداخ کی زمین کسی غیرریاستی باشندے کوخریدنے کی ضرورت ناہو۔مزکورہ لیڈر نے کہا ہم ہائی پاور والی کمیٹی کے ساتھ اپنے مطالبا ت رکھنے میں عار محسوس نہیں کرینگے اس ملاقات میں مرکزی وزارت داخلہ کی جانب سے کئی کونسلروں لداخ کے ایل جی اور ممبر پارلیمنٹ کوبھی شرکت کرنے کی دعوت دی جائے گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں