0

73،74آ ئینی ترمیم کے تحت جموں وکشمیرمیں بلدیاتی اداروں کے الیکشن مدت پورہونے سے پہلے نہیں کرائے گئے

اگرپورے ملک میں ترمیم کے تحت اقدامات اٹھائے جاتے ہیں جموں و کشمیر اسے محروم کیوں /سابق ڈپٹی میئر
سرینگر/ 04نومبر/اے پی آئی 73 وی 74 وی آئینی ترمیم جموں وکشمیر میں پوری طرح سے لاگو نہ ہونے پر حیرانگی کااظہار کرتے ہوئے سرینگر میونسپل کارپوریشن میں سابق ڈپٹی میئر نے کہا اگرآئین میں اسکی گنجائش ہے تومدت پوراہونے سے پہلے الیکشن کرائے جائے توپھر اس آئینی ترمیم کافائدہ جموں وکشمیر کے لوگوں کوکیوں نہیں دیاجاتا۔مدت کارپوری ہوگئی عوام کے تواقعات پرکھرا اترے کہ نہیں تاہم تمام اداروں میں تعینات ملازمین کے شکرگزار ہیں کہ انہوں نے ہرمعاملے میں تعاون فراہم کیا۔اے پی آ ئی نیوز ڈیسک کے مطابق سرینگر میونسپل کارپوریشن کی مدت کار چا رنومبر کومکمل ہوگئی اب میئرڈپٹی میئر کے جتنے بھی اختیارات تھے وہ سرینگرمیونسپل کارپوریشن کے کمشنر ی تحویل میں دے دیئے گئے ہے اور اب وہ میئرڈپٹی میئر کااستعمال کرکے لوگوں کوراحت پہنچانے کی کوشش کریگے تاہم میونسپل کارپوریشن کے میئر پرویز قادری نے پرُہجوم پریس کانفرنس کے دوران اس بات پر افسوس کااظہار کیا کہ ملک میں اقتدار کونچلی سطح پرمنتقل کرنے کے لئے 73-74وی ترمیم کی گئی تاکہ بلدیاتی اداروں کواختیارات دیئے جائے کہ وہ لوگوں کے کا م کرسکے۔ انہوں نے کہاکہ میونسپل کارپوریشنوں میونسپل کمیٹیوں کے الیکشن کرانے کااختیار چیف الیکٹرول افسرکے پاس ہے اور وہ الیکشن کرا سکتے ہے او راس سلسے میں الیکشن کمشن آف انڈیا کو فیصلے سے آگاہ کریگے۔ڈپٹی میئر نے کہاکہ آئین کی 74وی ترمیم کے تحت سرکار کو یہ اختیار ہے کہ وہ مدت مکمل ہونے سے پہلے الیکشن کراسکتی ہے تاکہ کام میں کسی بھی طرح کاواقع نہ ہو تاہم جموں و کشمیرمیں ایسانہیں کیاگیا حالانکہ 31اکتوبر 2019کوری آرگنائزیشن ایکٹ لاگوکیاگیاجس کے تحت ملک کے تمام بارہ سو آٹھ قوانین جموں و کشمیرمیں براہی راست لاگو ہوگئے۔انہوں نے زررائع ابلاغ کے ساتھ گفتگو کے دوران کہاکہ سرکار کا الیکشن نہ کرانا حیران کن فیصلہ ہے ایسی کیامجبوری ہے کہ الیکشن کوملتوی کیاگیا اوت سرینگر میونسپل کارپوریشن سے ساتھ دوسری میونسپل کونسلوں میونسپل کمیٹیوں کوبھی الیکشن کے بغیر مدت کار پوراہونے کے بعد چھوڑدیاگیا جوکسی بھی صورت میں جمہوری نظام میں جائز نہیں ہے۔سا بق ڈپٹی میئر نے کہاکہ راجیہ سبہااو رلوگ سبہا نے 74وی ترمیم میں یہ اختیاردیاہے کہ پانچ سال کی مدت پوراہونے سے پہلے الیکشن کرائیے جائے اور اسکی ذمہ داری چیف الیکٹرول افسرکی ہے تاہم جموں و کشمیرمیں یہ فارمولہ نہیں ازمایا گیا۔انہوں نے میونسپل کارپوریشن کے مدت کار ختم ہونے کے بعدکہاکہ ہم ان تمام اداروں کے ملازمین کے شکرگزارہیں کہ انہوں نے وقت وقت پر عوامی مسائل کاازالہ کرنے کے لئے تعاون فراہم کیاہم ان لوگوں کے بھی مرحوم منت ہے جنہوں نے اس وقت میں اپنے گھروں سے نکل کرووٹ دیاہم ان کے تواقعات پرکھرے اترے کہ نہیں ا سے لوگوں پرچھوڑدیاجائے تاہم یہ بات برُی طرح سے کھٹک رہی ہے کہ بلدیاتی اداروں کے الیکشن کرانے کی اگرجوازیت تھی تو اس پر عمل کیوں نہیں کیاگیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں