117

کرائم برانچ کشمیر کے سرینگر میں چارٹرڈ اکاو نٹس کے دفتر سمیت آٹھ مقامات پر چھاپے

مجرمانہ دستاویزات، ڈیسک ٹاپ اور لیپ ٹاپ کمپیوٹرس وغیرہ ضبط
سرینگر03جولائی
کرائم برانچ کشمیر نے پہلے سے درج ایک کیس کے سلسلے میں سرینگر میں چارٹرڈ اکاو نٹس کے دفتر سمیت کم از کم آٹھ مقامات پر چھاپے مارے جس دوران تلاشیاں بھی لی گئی ۔ سی این آئی کو اس ضمن میں ملی تفصیلات کے مطابق کشمیر کی کرائم برانچ نے سرینگر میں چارٹرڈ اکاو نٹس کے دفتر سمیت کم از کم آٹھ مقامات پر چھاپے مارے۔معلوم ہو اہے کہ ایجنسی نے چھاپے پہلے سے درج ایک کیس کے سلسلے میں ڈالیں ۔ ذرائع نے بتایا کہ کرائم برانچ کشمیر کی ایک ٹیم نے ایک افسر کی سربراہی میں ایک چارٹرڈ اکاو نٹنٹ کے دفتر پر چھاپہ مارا جس کی شناخت عمران امین دارا ولد محمد امین دارا ساکن گلاب باغ سرینگر کے طور پر کی گئی۔اسی دوران معلوم ہوا ہے کہ ڈی وائی ایس پی کی سربراہی میں ایک او
ر ٹیم نے صورہ کے علاقے میں چھاپہ مارا جس دوران تلاشیاں بھی لی گئی ۔ ذرائع نے بتایا کہ سرینگر ضلع میں آٹھ مقامات پر چھاپے مارے گئے جن میں پارمپوہ ، بٹہ مال ، راجباغ اور صورہ علاقے شامل ہیں۔بتایا جاتا ہے کہ چھاپوں کے دوران تلاشیاں بھی لی گئی ۔گرائم برانچ کے ایک سنیئر افسر نے چھاپوں کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ تمام علاقوں میں چھاپے پہلے سے درج ایک کیس کے سلسلے میں ڈالیں گئے ۔ انہوں نے تفصیلات فراہم کرتے ہوئے بتایا کہ اقتصادی جرائم ونگ،سرینگر (کرائم برانچ کشمیر) کی متعدد ٹیموں نے ایگزیکٹو ڈیوٹی مجسٹریٹس کی موجودگی میں کیس میں مبینہ طور پر ملوث ملزمان/مشتبہ افراد کی متعدد رہائش گاہوں اور دفتر کے احاطے کی تلاشی لی۔انہوںنے کہا کہ مقدمات الیکٹرانک اور دیگر ڈیٹا کی مجرمانہ ہیرا پھیری/ چھیڑ چھاڑ سے متعلق ہیں ۔ بیان کے مطابق مقدمات 25مئی کو پرنسپل کمشنر آف انکم ٹیکس سرینگر کے دفتر سے ایک شکایت موصول ہونے پر درج کیے گئے تھے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ تلاشی مقدمات کی جاری تحقیقات کے ایک حصے کے طور پر کی گئی تھیں۔ تلاشی لینے کے لیے پوری مستعدی اور قانون کے ذریعہ لازمی تمام طریقہ کار کی پیروی کی گئی تھی۔ بیان میں کہا گیا کہ تلاشی آپریشن کے دوران کوئی گرفتاری عمل میں نہیں آئی۔ تاہم، کچھ مجرمانہ دستاویزات، ڈیسک ٹاپ اور لیپ ٹاپ کمپیوٹرز وغیرہ برآمد اور قبضے میں لے لیے گئے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں