71

جموں و کشمیر حکومت نے بے زمین غریبوں کیلئے زمین کی منظوری دی

لیفٹیننٹ گورنر نے اس فیصلے کو تاریخی قرا دیا
سرینگر۔ 3؍ جولائی۔ ایم این این۔ جموںو کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر جناب منوج سنہا کے ایک تاریخی فیصلے میں، حکومت جموں کشمیر نے بے زمین PMAY (G) استفادہ کنندگان کو 5 مرلہ زمین الاٹ کرنے کی تجویز کو منظوری دی ہے۔ یہ فیصلہ 21 جون 2023 کو انتظامی کونسل نے لیا تھا۔موجودہ الاٹمنٹ صرف مستقل انتظار کی فہرست 2018-19 سے باہر رہ جانے والے کیسوں تک محدود ہے، جسے بعد میں، 2024-25 میں PMAY (G) اسکیم کے اگلے مرحلے کے آغاز کے وقت انہی زمروں تک بڑھایا جا سکتا ہے۔ بے زمین مستفیدین کے، جو دوسری صورت میں PMAY(G) فیز-III کے تحت ہاؤسنگ امداد حاصل کرنے کے اہل ہو جاتے ہیں۔ جے کے ریونیو قوانین کے تحت زمین کی الاٹمنٹ کے لیے متعلقہ ڈپٹی کمشنر کے ذریعے آواس پلس سے فائدہ اٹھانے والوں کے درج ذیل زمروں پر غور کیا جائے گا:م ریاستی زمین پر رہنے والے لوگ؛ii جنگل کی زمین پر رہنے والے لوگ؛iii رکھ اور کھیتوں میں رہنے والے لوگ، جہاں تعمیرات کی تعمیرنہیں ہیں۔iv کسٹوڈین زمین پر بیٹھے لوگ؛ اورv. داچیگام پارک کے قریب حکومت کی طرف سے بے گھر لوگوں کو الاٹ کی گئی زمینزراعت کے مقصد کے لیے، جہاں تعمیر کی اجازت نہیں ہے۔vi کیسوں کی کوئی دوسری قسم جو مکان کے لیے دوسری صورت میں اہل ہیں لیکن ان کے پاس تعمیر کے لیے کوئی زمین دستیاب نہیں ہے۔ لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ یہ جموں کشمیر کے لیے ایک تاریخی دن ہے اور ہزاروں بے زمین خاندانوں کے لیے ایک نئی شروعات ہے۔ لیفٹیننٹ گورنر جناب منوج سنہا نے مزید کہا کہ یہ تاریخی فیصلہ سماجی انصاف، مساوات، احترام کے لیے انتظامیہ کی کوششوں میں ایک سنہری باب ثابت ہوگا۔ اور تمام شہریوں کے لیے یکساں مواقع فراہم کرے گا۔لیفٹننٹ گورنر نے کہا کہ “یہ راہ توڑنے والا فیصلہ نہ صرف بے زمین غریبوں کو زمین کا ایک ٹکڑا رکھنے اور ان کے پاس مکان رکھنے کا حقدار بنائے گا بلکہ یہ انہیں ذریعہ معاش فراہم کرے گا، ان کا معیار زندگی بلند کرے گا اور ان کے خوابوں اور امنگوں کو پورا کرے گا۔” لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ معاشرے کا غریب طبقہ حکومتی پالیسیوں کے مرکز میں ہے اور ایک بڑی آبادی جو آزادی کی سات دہائیوں کے بعد بھی بنیادی سہولتوں اور حقوق سے محروم تھی کو ترقی کے دھارے میں لایا جا رہا ہے۔جموں کشمیر حکومت جامع ترقی کے لیے پرعزم ہے۔ اس اقدام سے غریبوں اور پسماندہ افراد کے لیے لامتناہی مواقع کھلیں گے اور اس تاریخی فیصلے کے ساتھ انتظامیہ قوم کی تعمیر کے کام میں ان کی بے پناہ شراکت کا اعتراف کر رہی ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں