56

2047 تک ہندوستان کو ترقی یافتہ ملک بنانے کے لیے حکومت اور سماج کو مل کر کام کرنا ہوگا۔راجناتھ

جالندھر ۔3؍جولائی۔ ایم این این۔ وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے پیر کو کہا کہ حکومت، سماج کے ہر طبقے اور سماجی تنظیموں کو 2047 تک ہندوستان کو ایک ترقی یافتہ ملک بنانے کے لیے مل کر کام کرنا ہوگا۔سنگھ پنجاب کے جالندھر میں تھے جہاں انہوں نے ‘ ڈویہ جیوتی جاگرتی سنستھان’ )ڈی جے جے ایس)کے زیر اہتمام ‘ گرو پورنیما مہوتسو’ میں شرکت کی۔اس موقع پر مرکزی وزیر نے جالندھر کے نورمحل میں واقع سنستھان کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ انہیں خوشی ہے کہ ڈی جے جے ایس انسانوں کی خدمت کو اپنا اعلیٰ ترین انسان دوستی سمجھ کر ہر شعبے میں کام کر رہی ہے۔”شری آشوتوش مہاراج نے ‘ سروچ پرمارتھ’ کے مقصد سے لوگوں کو متحد کیا۔ ‘ پرمارتھ’ کا مطلب ہے کسی فائدے کی تلاش کے بغیر دوسروں کی خدمت کرنا، جو صرف ایک عظیم شخصیت ہی کر سکتی ہے۔ سوامی جی نے اپنے کاموں سے لوگوں کو متاثر کیا۔انہوں نے کہا کہ سوامی جی کی زندگی کی اقدار اور مقاصد کو عوام تک پہنچانے کے لیے مسلسل کام کر رہی ہے۔انہوں نے مزید کہا، “جس طرح سوامی جی نے بے لوث طریقے سے قوم اور سماج کی فلاح و بہبود کے لیے کام کیا، وہ آج بھی لوگوں کے ایک وسیع مجموعے کے لیے ایک تحریک ہے۔ شری راجناتھ سنگھ نے کہا، “آج گرو پورنیما کا دن ہے، اور یہ دن ہمیں دنیا میں گرو کی اہمیت کا احساس دلاتا ہے… گرو دنیا میں ہمارے لیے رہنما کے طور پر کام کرتا ہے۔ وزیر دفاع نے کہا کہ ملک ‘امرت کال’ میں داخل ہو گیا ہے، جسے حکومت نے 25 سالہ مدت کے طور پر بیان کیا ہے جو ہندوستان کی آزادی کی صد سالہ تکمیل ہے۔”امرت کال کے اختتام تک یا 2047 تک، ہم ہندوستان کو ایک ترقی یافتہ ملک بنانے کے عزم کے ساتھ آگے بڑھے ہیں۔ ملک کو ترقی یافتہ بنانے کے لیے حکومت، سماج کے ہر طبقے کے ساتھ ساتھ دیویا جیوتی جاگرتی سنستھان جیسے اداروں کی ضرورت ہوگی۔ دھرم ہماری زندگی کے تمام مراحل اور تمام کرداروں میں ضروری ہے۔ ہمیں اپنی ذاتی اور عوامی زندگیوں میں ‘دھرم’ کی پیروی کرنی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ‘ دھرم’ سے اس کا مطلب فرض ہے ۔ شری سنگھ نے کہا کہ وزیر دفاع ہونے کے ناطے یہ ان کا فرض ہے کہ وہ ملک کے بہادر سپاہیوں کے ذریعے ہندوستان کی حفاظت کریں۔”آپ کسی بھی عہدے پر فائز ہوں، آپ کا ایک خاص ‘ دھرم’ ہے اور آپ کو اس ‘دھرم’ کی پیروی کرنی ہوگی۔ ‘دھرم’ زندگی کے ہر حصے میں ضروری ہے، چاہے وہ سیاست ہی کیوں نہ ہ۔سنگھ نے کہا، ’’ایک بار مہاتما گاندھی نے کہا تھا کہ جو لوگ کہتے ہیں کہ مذہب کا سیاست سے کوئی تلق نہیں ہے، وہ نہیں جانتے کہ مذہب کیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں