119

جی 20کے بعد غیر ملکی سیاحوں کی آمد میں ریکارڈ اضافہ

آنے والے وقت میں سیاحوں کی آمد میں مزید اضافہ ہوگا (لیفٹنٹ گورنر)
سرینگر03جولائی (یو این آئی)
جموں وکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کا کہنا ہے کہ سری نگر میں منعقدہ جی ٹونٹی ٹورزم ورکنگ اجلاس کے بعد غیر ملکی سیاحوں کی آمد میں اضافہ دیکھا جا رہا ہے اور اس میں آنے والے مہینوں کے دوران مزید اضافہ متوقع ہے۔انہوں نے جموں وکشمیر کے ان کنبوں جن کے پاس اپنی زمین نہیں ہے، کو 5مرلہ زمین فراہم کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ یونین ٹریٹری میں وزیر اعظم آواس یوجنا کے تحت قریب دو لاکھ بے گھر کنبوں کو گھر فراہم کئے جا رہے ہیں۔موصوف لیفٹیننٹ گورنر نے ان باتوں کا اظہار پیر کو یہاں راج بھون میں منعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا۔انہوں نے کہا: سری نگر میں 22مئی سے 25مئی تک منعقدہ کامیاب جی ٹونٹی ٹورزم اجلاس جموں وکشمیر کے شعبہ سیاحت کے لئے انتہائی کار آمد ثابت ہو رہا ہے، اس اجلاس کے مندوبین ایک مثبت پیغام لے کر اپنے اپنے ملکوں کو واپس گئے ہیں ۔ان کا کہنا تھا جی ٹونٹی اجلاس کے بعد ہم نے جموں و کشمیر میں غیر ملکی سیاحوں
کی آمد میں اضافہ دیکھا ہے اور ان سیاحوں میں تعداد میں آنے والے مہینوں کے دوران مزید اضافہ متوقع ہے ۔منوج سنہا نے کہا کہ سری نگر بہت تیزی کے ساتھ بین الاقوامی سرگرمیوں کا ایک مرکز بن رہا ہے۔انہوں نے کہا: سری نگر میں حال ہی میں پہلی بار انڈین سسٹم آف میڈیسنز، انجینئرس ایسو سی ایشن، چارٹرڈ اکاﺅٹنٹ ایسو سی ایشن اور عدالت عظمیٰ کے 18جج صاحبان نے مختلف نوعیت کے پروگراموں اور میٹنگوں میں حصہ لیا ۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے وزیر اعظم آواس یوجنا کا اعلان کیا تھا اور جموں وکشمیر اس میں بھی پیچھے نہیں ہے۔انہوں نے کہا انتظامی کونسل اور محکمہ دیہی ترقی کے ساتھ بات چیت کے بعد یہ فیصلہ لیا گیا کہ جموں وکشمیر کے بے گھر کنبوں کو 5مرلہ فی کنبہ اراضی فراہم کی جائے گی۔ان کا کہنا تھااب تک 2711کنبوں کو زمین فراہم کی گئی ہے بہت جلد زمین کنبوں کو زمین فراہم کی جائے گی ۔انہوں نے کہا: اسی طرح جہاں تک ان کنبوں جن کے پاس زمین نہیں ہے، کا تعلق ہے، اب تک ایک لاکھ 99ہزار 5سو 50کنبوں کی نشاندہی کی گئی ہے اور 21جون تک ایک لاکھ 44ہزار کنبوں کو زمین فراہمی منظور بھی کی گئی ہے اور باقی کنبوں کا کام بھی بہت جلد کیا جائے گا ۔مغربی پاکستان کے مہاجرین کو اس سکیم کے دائرے میں لانے کے بارے میں پوچھے جانے پر منوج سنہا نے کہا: اس اسکیم کو بلا لحاظ ذات یا مذہب عمل میں لایا جا رہا ہے ۔انہوں نے کہا جن کے پاس زمین نہیں انہیں زمین فراہم کرنا اور بے گھر کنبوں کو گھر فراہم کرنا اپنے آپ میں ایک انقلابی اقدام ہے ۔ان کا کہنا تھا:جب ایک غریب کو گھر ملے گا تب وہ روزی روٹی کمانے کی فکر کرے گا اور اپنے بچوں کو اسکول بھیجے گا ۔انہوں نے کہا زمین اور گھر مستحقین کو ہی اپنے پنچایتی حلقوں میں دئے جا رہے ہیں ایسا نہیں ہے کہ ضلع اننت ناگ کے مستحق کو سانبہ میں گھر دیا جا رہا ہے’۔شری امر ناتھ جی یاترا کے بارے میں پوچھے جانے پر لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ دونوں راستوں پر سخت سیکورٹی بندوبست کے بیچ یاترا بہت ہی پر امن اور ہموار طریقے سے جاری ہے۔انہوں نے کہا: ‘یاترا کے دوران صفائی ستھرائی کو یقینی بنانے کے لئے 4 ہزار سینٹری ورکروں کو تعینات کیا گیا ہے’۔ان کا کہنا تھا کہ یاترا کے دوران ایک مسئلہ سیاحوں اور مقامی لوگوں کی نقل و حمل کے لئے ٹریفک کا ہوتا ہے جس کو اںے والے ایک دو دنوں میں ٹھیک کیا جائے گا۔مسٹر سنہا نے کہا کہ اس بات کو یقینی بنایا جا رہا ہے کہ یاترا کے دوران مقامی لوگوں کو کم سے کم تکلیف پہنچے اور ان کا کام کاج متاثر نہ ہو۔انہوں نے کہا کہ لوگ امن محسوس کر رہے ہیں اور آںے والے مہینوں کے دوران زیادہ سے زیادہ لوگ ایسا محسوس کریں گے۔ان کا کہنا تھا: ‘جیسا کہ میں نے کہا کہ آنے والے دو دنوں میں ٹریفک کو سٹریم لائن کیا جائے گا پہلی بار کشمیر آنے والا یاتری بے خبر ہوتا ہے جس کی وجہ سے وہ ٹریفک جام وغیر میں پھنس جاتا ہے’۔منوج سنہا نے کہا کہ ایک ٹریفک پلان بنایا جا رہا ہے جس پر عمل در آمد کیا جائے گا۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ امر ناتھ یاترا کو کور کرنے کے لئے میڈیا پر کوئی پابندی عائد نہیں ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں